اہم ترین خبریںپاکستان

ججزمخالف بیان، علامہ افتخار الدین مرزا اسلام آباد ہائی کورٹ سےضمانت پر رہا

ڈپٹی اٹارنی جنرل کا کہنا تھا علامہ مرزا افتخارالدین کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ سمیت ہتک عزت اور دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج ہے

شیعیت نیوز: اسلام آباد ہائی کورٹ نے ججز کے خلاف متنازع اور توہین آمیز ویڈیو کیس میں گرفتار شیعہ عالم دین علامہ افتخار الدین مرزا کی ضمانت منظور کر لی۔ چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس عامر فاروق پر مشتمل بینچ نے عدلیہ کے خلاف متنازع اور توہین آمیز تقریر کے کیس میں گرفتارعلامہ افتخار الدین مرزا کی ضمانت 10 لاکھ روپے کے مچلکے کے عوض منظور کی۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے افتخار الدین مرزا کے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کو معلوم ہے نا کہ ملزم نے جج اور عدلیہ سے متعلق کیا کہا ہے؟، وکیل نے کہا کہ علامہ افتخار الدین مرزا اس بیان میں اپنے الفاظ کی حد تک معافی مانگ چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: مشیر رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ محمد تسخیری کی ذات خیر و برکت کا باعث تھی، علامہ ساجد نقوی

جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ توہین عدالت کا معاملہ سپریم کورٹ میں ہے، ہم تو ضمانت دیکھ رہے ہیں۔ چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ یہ پوری عدلیہ کو بدنام کرنے کا معاملہ ہے۔ علامہ افتخار الدین مرزا کے وکیل نے کہا کہ علامہ افتخار الدین مرزا کا وہ بیان ہم نے اپلوڈ یا وائرل نہیں کیا۔

یہ بھی پڑھیں: امید ہے کہ اب سعودی عرب بھی کشمیر کے معاملے پر ہمارے ساتھ کھڑا ہوگا، شاہ محمود قریشی

ڈپٹی اٹارنی جنرل کا کہنا تھا  افتخار الدین مرزا کے خلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ سمیت ہتک عزت اور دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج ہے۔ اعلیٰ عدالت کے چیف جسٹس نے کہا کہ ہم فیئر ٹرائل کو یقینی بنانے کے لیے ضمانت منظور کر رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close