اہم ترین خبریںپاکستان

لوٹی ہوئی دولت واپس لا کر آئی ایم ایف کے چنگل سے نجات حاصل کی جا سکتی ہے، اسد نقوی

احتسابی عمل میں شفافیت بنیادی شرط ہے۔قانون کی راہ میں کسی کی ذاتی حیثیت یا شخصیت آڑے نہیں آنی چاہیئے ۔

شیعت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات سید اسد نقوی نے کہا ہے کہ احتساب کے عمل کو کسی سیاسی ضرورت یا مصلحتی تقاضوں کےتابع نہیں ہونا چاہیئے۔احتسابی عمل میں شفافیت بنیادی شرط ہے۔قانون کی راہ میں کسی کی ذاتی حیثیت یا شخصیت آڑے نہیں آنی چاہیئے ۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان کو اینٹی سامراج بلاک کو مضبوط کرنا چاہئے،علامہ مقصودڈومکی

انہوں نے کہاکہ کسی بھی قسم کی جانبداری سے نا صرف متعلقہ سسٹم پر سوال اٹھتے ہیں بلکہ حکومتی کارگزاری پر بھی شکوک و شبہات کا اظہار ہونے لگتا ہے۔پوری قوم چاہتی ہے کہ قومی خزانے کو ذاتی دولت سمجھ کر لوٹنے والوں کےاحتساب میں کسی بھی قسم کی لچک نہ برتی جائے۔

یہ بھی پڑھیں: شہدائے آرمی پبلک اسکول کو بھول نہیں سکتے، بطور قوم دہشتگردی کو شکست دی ہے

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی لوٹی ہوئی دولت واپس لا کر آئی ایم ایف کے چنگل سے بھی نجات حاصل کی جا سکتی ہے۔ملک میں مہنگائی اور غربت کی بڑھتی ہوئی شرح سب کیلئے تشویش کا باعث ہے۔ اس پر قابو پانے کیلئے معیشت کو مضبوط کرنا ہو گا۔ معیشت کی مضبوطی کے لیے ضروری ہے کہ احتساب کے عمل میں تیزی لائی جائے اور اسے ہر طرح کی بیرونی مداخلت سے آزاد رکھا جائے۔

یہ بھی پڑھیں: سانحہ آرمی پبلک اسکول میں ملوث اہم تکفیری سہولت کار آج تختہ دار پر لٹکا دیا گیا

انہوں نے کہا جو قوموں کرپشن کے خلاف کڑے احتساب پریقین رکھتی ہیں انہیں ترقی کی راہ میں کسی رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑتا۔ پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک کی صف میں لاکھڑا کرنے کیلئے ضروری ہے کہ احتساب کے عمل کو نیک نیتی اور سنجیدہ انداز سے مثبت سمت میں جاری رکھا جائے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close