اہم ترین خبریںپاکستان کی اہم خبریں

وزیر اعظم عمران خان کاعالمی قوتوں سے ایک مرتبہ پھر ایران سے پابندیاں اٹھانے کا پرزورمطالبہ

وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وائرس نمٹنے کے لیے قوم کو متحد ہونا ہوگا افراتفری سے زیادہ نقصان ہوگا اگلے ڈیڑھ ماہ میں خود نظم و ضبط کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔

شیعت نیوز: وزیر اعظم عمران خان کاعالمی قوتوں سے ایک مرتبہ پھر ایران پرسے پابندیاں اٹھانے کا پرزورمطالبہ، عمران خان نے کہاکہ تمام ممالک سے مطالبہ کروں گا کہ  فوری طور پر ایران پرسے پابندیاں ہٹائیں ، یہ زیادتی ہوگی کہ دنیا ایک طرف کورونا جیسے مرض پر قابو پانا چاہتی ہے اور دوسری جانب ایران پر سنگین پابندیاں بھی برقرار رکھے ہوئے ہے۔ سنئیر صحافیوں سے گفتگو میں وزیراعظم نے کہا کہ کورونا وائرس نمٹنے کے لیے قوم کو متحد ہونا ہوگا افراتفری سے زیادہ نقصان ہوگا اگلے ڈیڑھ ماہ میں خود نظم و ضبط کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں: سرکاری عملے کا انکار،شیعہ قومی تنظیموں نےقرنطینہ مراکز میں زائرین کی خدمت کا بیڑا اٹھالیا

کورونا سے متعلق سینیئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ چار سے پانچ فیصد مریضوں کو اگر انتہائی نگہداشت کی ضرورت پیش آئی تو صورت حال خراب ہوگی اس کا مقابلہ کرنے کے لیے تیاری کر رہے ہیں۔ دنیا کے تجربے سے ثابت ہوا کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سماجی سطح پر فاصلہ رکھنے کی حکمت عملی مؤثر ثابت ہوئی ہے، عوام پُر ہجوم مقامات پر جانے سے گریز کریں۔ انہوں نے کہا کہ علامات ظاہر ہونے پر متاثرہ شخص خود کو گھر تک محدود کرلے، وائرس کے ایک دم بڑھنے سے مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ ماہرین کی رائے ہے کہ درجہ حرارت بڑھنے سے وائرس کے اثرات کم ہو جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: سعودی عرب سے آئی خاتون نے اپنے 16رشتہ داروں میں کورونا وائرس منتقل کردیا، سعید غنی

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ طبی عملے کے لیے حفاظتی سامان کی کٹس منگوائی جا رہی ہیں اور ان کا تحفظ ہماری اوّلین ترجیح ہے۔ دوسرا خطرہ یہ ہے کہ معاشرے میں افراتفری اور خوف کی فضا پیدا نہ ہوجائے۔ اس میں میڈیا، رائے ساز افراد، اینکر پرسن اور صحافیوں کو ذمے داری کا مظاہرہ کرنا ہوگا، ان حالات میں محتاط رہیں پیمرا کو بھی اس حوالے سے گائیڈ لائن جاری کریں گے۔ وزیراعظم نے کہا کہ گھبراہٹ میں لوگ خریداری شروع کردیں گے تو حکومت بھی نہیں سنبھال سکے گی۔ کورنا وائرس سے جنگ قوم جیتے گی، تنہا حکومت نہیں جیت سکتی۔ پھیلاؤ میں اضافہ ہوا تو مکمل لاک ڈاؤن پر بھی غور کیا جائے گا فی الوقت پاکستان اس کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ ان کا کہنا تھا کہ تفتان میں تمام سہولیات ظفر مرزا کے دورے کے بعد دی گئیں، وزیراعلیٰ بلوچستان پر انگلیاں اٹھنے پر افسوس ہے۔

یہ بھی پڑھیں: صیہونی فوج کا مسجد اقصیٰ میں فلسطینی نمازیوں پر وحشیانہ تشدد، گرفتاریاں

وزیراعظم ںے کہا کہ چین میں کورونا وباء شروع ہونے پر ان کی قیادت سے رابطے میں تھے۔ چین سے ایک بھی کیس پاکستان نہیں آیا۔ انہوں نے کہا ایران میں وبا کے باعث مریضوں کو سنبھالنے کی صلاحیت نہیں رہی تھی جس کی وجہ سے لوگوں کو واپس لانا پڑا۔ چین نے پاکستانی طلبا کے بارے میں مکمل یقین دہانی کروائی تھی۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ کورونا وائرس سے ایران میں پیدا ہونے والے صورتحال کے پیش نظر پابندیاں ختم کی جائیں۔ وزیر اعظم نے بتایا کہ معاشی سرگرمیوں میں تعطل کی وجہ سے پیدا ہونے والے چیلنجز سے مقابلے کے لیے منگل کو معاشی پیکج کا اعلان کیا جائے گا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close