مقبوضہ فلسطین

انتہا پسند صیہونیوں کے ایک گروہ کے حملے میں تین افراد زخمی، زرعی زمینیں نذر آتش

شیعت نیوز : مغربی کنارے کے شہر رام اللہ میں راس کرکر گاؤں میں صیہونی آبادکاروں کے ایک گروہ کے حملے میں ایک ہی خاندان کے تین افراد زخمی ہو گئے۔

مقامی ذرائع نے کہا کہ صیہونی آبادکاروں نے 62 سالہ راتب ابو فضیدہ اسکے بیٹے عثمان اور اسکے پوتے محب پر راس کر کر میں اپنے کھیتوں میں کام کرنے کے دوران حملہ کیا۔

تینوں شہریوں کوشیدید چوٹیں آئیں اور انہیں علاج کے لئے مقامی اسپتال منتقل کیا گیا۔

مقبوضہ مغربی کنارے میں آبادکاری پر تشدد معمول کی بات ہے اور اسرائیلی حکام کی طرف سے شاذ و نادر ہی اس کے خلاف قانونی کارروائی کی جاتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : ٹرمپ تاریخ کا بدترین مجرم ہے اور دنیا اسکے جرائم سے بچ نہیں پائےگی، نوم چومسکی

دوسری جانب انتہا پسند صیہونی آبادکاروں کے ایک گروہ نے مقبوضہ مغربی کنارے میں نابلس کے شمال میں البرقع گاؤں میں وسیع پیمانے پر رزعی زمینوں کو آگ لگا دی۔

شمالی مغربی کنارے میں آبادکاری کی کاروائیوں کی نگرانی رکھنے والے فلسطینی عہدیدار غسان دغلس نے کہا کہ صیہونی آبادکاروں کے ایک گروہ نے البرقع گاؤں میں باب الوادی میں پلاٹوں کو آگ لگا دی۔

انہوں نے مزید کہا کہ آباد کاروں نے گاؤں کے شمال مشرق میں واقع ایک ایسے علاقے کو نشانہ بنایا جہاں درجنوں دونم اراضی ہے ، جن میں زیادہ تر بادام کے درخت لگائے گئے ہیں۔

اہلکار نے اس علاقے میں ہونے والی آگ سے ہونے والے نقصان کے بارے میں مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

دریں اثنا اسرائیلی پولیس نے مقبوضہ بیت المقدس کے علاقے باب حطا کے قریب فلسطینی ماں اور اسکے بچے کو اغوا کر لیا۔

مقامی ذرائع نے کہا کہ اسرائیلی پولیس نے فلسطینی ماں کو گرفتار کیا جو اپنے پانچ ماہ کے بچے کے ساتھ مقبوضہ بیت المقدس باب حطا میں موجود تھی۔

اسی دوران اسرائیلی پولیس نے بیت المقدس میں السواحرہ الشرقیہ اور ابو دس دیہاتوں میں ہلہ بولا اور گھروں اور دوکانوں کی تلاشی لی۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close