عراق

عراق: امریکی سفارت خانے کے قریب پھر حملہ، ترک ڈرون حملے میں 16 جاں بحق

شیعت نیوز : عراق کے دارالحکومت بغداد کے گرین زون میں امریکی سفارت خانے کے قریب چند راکٹ داغے گئے ہیں۔ دوسری طرف ترک ڈرون حملے میں سکیورٹی اہلکاروں سمیت 16 افراد جاں بحق ہو گئے۔

آئی آر آئی بی کی رپورٹ کے مطابق عراق کے دارالحکومت بغداد کے گرین زون میں امریکی سفارت خانے کے قریب 3 راکٹ داغے گئے۔

راکٹ حملے کے بعد خطرے کے سائرن بجنے لگے۔ ابھی تک اس حملے میں جانی نقصان کے حوالے سے کوئی رپورٹ سامنے نہیں آئی ہے۔ چند روز قبل بھی التاجی اور البلد کے امریکی فوجی اڈوں کے قریب راکٹوں سے حملہ ہوا تھا۔

عراقی عوام اور سیاسی اور مذہبی جماعتیں ملک سے امریکی فوجیوں کے انخلا کا مطالبہ کر رہی ہیں جبکہ عراق کی پارلیمنٹ نے بھی اس ملک سے امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں کے انخلا کا بل اکثریتی رائے سے منطور کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : عالمی برادری اسرائیلی جرائم کو لگام دے، اسلامی تعاون تنظیم

واضح رہے کہ 3 جنوری کو امریکی دہشت گردوں نے فضائی حملہ کر کے جنرل قاسم سلیمانی، ابو مہدی المہندس اور ان کے کئی دیگر ساتھیوں کو شہید کر دیا تھا جس کے بدلے میں ایران نے 8 جنوری کو عراق میں امریکی دہشت گردی کے اہم اڈے عین الاسد پر درجنوں میزائل داغے۔ ایران کے اس جوابی حملے میں امریکہ کو بڑے پیمانے پر جانی اور مالی نقصان ہوا۔

دوسری جانب خبری ذرائع کا کہنا ہے کہ عراق کے شمال میں ترک ڈرون حملے میں سکیورٹی اہلکاروں سمیت 16 افراد جاں بحق ہو گئے۔

بغداد الیوم کی رپورٹ کے مطابق عراق کی بارڈر سکیورٹی فورسز کی کردستان لیبر پارٹی کے اراکین کے ساتھ ہونے والی میٹنگ کے موقع پر ترکی کے ڈرون حملے میں عراق کی سرحدی فورس کے کمانڈر اوردیگر 4 اہلکار جاں بحق ہوئے۔ اس حملے میں کردستان لیبر پارٹی کے 11 اراکین بھی مارے گئے۔

ترکی کی حکومت اور فوج نے تاحال اس حملے کے حوالے سے کوئی بیان نہیں دیا ہے۔

واضح رہے کہ ترکی نے حالیہ برسوں کے دوران ترک کردستان لیبر پارٹی (پی کے کے ) کے عناصر کی سرکوبی کے بہانے عراق کی سرزمین پر کئی مرتبہ جارحیت کی اور عراق کی حکومت نے ترکی کے اس قسم کے حملوں کو عراق کی ارضی سالمیت کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے شدید احتجاج کیا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close