عراق

عراق: امریکی فوجی اڈے التاجی پر ایک بار پھر راکٹوں سے حملہ

شیعت نیوز : خبری ذرائع کا کہنا ہے کہ عراق کے دارالحکومت بغداد کے قریب واقع امریکہ سے وابستہ فوجی اڈے التاجی کے قریب دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں۔

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق اتوار کی رات التاجی فوجی اڈے پر راکٹوں سے حملہ ہوا ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران التاجی پر یہ دوسرا حملہ ہے ۔ تاہم ابھی تک عراق کے سرکاری ذرائع ابلاغ نے اس حملے کے بارے میں کوئی رپورٹ نہیں دی ہے۔

کل رات بھی التاجی فوجی اڈے پر کاتیوشا راکٹوں سے حملہ ہوا تھا جس کے بعد عراق کے وزیر اعظم مصطفی الکاظمی نے حملوں کی تحقیقات کیلئے ایک کمیٹی بھی تشکیل دی تھی۔

واضح رہے کہ مارچ 2020 میں بھی التاجی میں امریکی فوجی اڈے کو نشانہ بنایا گیا تھا جس میں 3 امریکی دہشتگرد اور ایک برطانوی فوجی ہلاک اور 12 سے زائد زخمی ہوئے تھے جس کے بعد امریکی دہشتگردوں نے اگلے ہی روز عراقی رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر بم گرائے تھے جس میں 3 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : امارات کا اسرائیل سے تعلقات استوار کرنے کے قیام پر زور۔ فلسطینی تحریکوں کی مذمت

دوسری جانب عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے صوبہ صلاح الدین میں داعش کے خلاف آپریشن کلین اپ کا آغاز کردیا ہے۔

عراقی ذرائع کے مطابق اس آپریشن کا مقصد صوبہ صلاح الدین کے شہر سامرا کے علاقے یثرب سے داعش کے باقی بچے عناصر کا صفایا کرنا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ آپریشن کے آغاز میں درجنوں داعشی عناصر کو گرفتار کر لیا گیا جنہیں قانونی مراحل کی تکمیل کے لئے متعلقہ اداروں کے حوالے کیا جارہا ہے۔

عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے گزشتہ ہفتے شام کی سرحد سے ملنے والے صوبہ نینوا کے دو سو کلو میٹر کے علاقے سے دہشت گردوں کا صفایا کیا تھا۔

عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے عراق میں داعش کی شکست میں اہم کردار ادا کیا ہے اور اب وہ، فوج اور سیکورٹی اداروں کے تعاون سے مختلف شہروں سے داعش دہشت گرد گروہ کے باقی بچے عناصر کا صفایا کر رہی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close