عراق

عراق: حشدالشعبی کا امریکی سفارت خانے کے سامنے احتجاج ختم کرنے کی اپیل

شیعت نیوز : عراق کی عوامی رضاکار فورس حشدالشعبی نے عراقی مظاہرین سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ بغداد میں امریکی سفارت خانے کے سامنے اپنے احتجاج کا سلسلہ بند کریں۔

عراق کی عوامی رضا کارفورس نے بدھ کو ایک بیان جاری کرکے عراقی مظاہرین سے اپیل کی ہے کہ وہ مسلح افواج کے کمانڈر اور وزیراعظم عادل عبدالمہدی کی درخواست کو تسلیم کرتے ہوئے بغداد سے باہر نکل جائیں۔

یہ بھی پڑھیں : غیور عراقی عوام کا حشدالشعبی کے مراکز پر حملوں کے خلاف امریکی سفارتخانے پر حملہ

ہزاروں عراقی جوحشدالشعبی کے مراکز پر امریکی جارحیت کے خلاف منگل سے بغداد میں امریکی سفارت خانے کے سامنے دھرنا دیئے بیٹھے تھے، بدھ کو بھی اپنے احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا۔

ایک عراقی عہدیدار کا کہنا ہے کہ بغداد میں امریکی سفارت خانے کے سامنے دھرنے پر بیٹھے زخمیوں کی تعداد ستتر تک پہنچ گئی ہے۔

یہ مظاہرین امریکی فوجیوں کے میرنس کی فائرنگ، دھوئیں والے بموں اور گولوں سے زخمی ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سرزمین ِ عراق پر امریکی افواج کو ملنے والا ہمارا جواب انتہائی شدید اور دندان شکن ہوگا، حشد الشعبی

قابل ذکر ہے کہ امریکی ڈرون طیاروں نے اتوار کی رات عراق کے سرحدی شہر القائم میں حشدالشعبی کے مراکز پر بمباری کر کے کم سے کم پچیس افراد کو شہید اور اکاون کو زخمی کردیا تھا۔

عراق کےحشدالشعبی مرکز پر امریکی حملے سے عراقی عوام کا غم و غصہ بھڑک اُٹھا یہاں تک کہ انھوں نے منگل کو شہداء کے جنازے دفن کرنے کے بعد امریکی پرچم کو نذرآتش کردیا اور امریکی سفارتخانے کی دیواروں پرحشدالشعبی کے پرچم نصب کردیئے اور عراق میں امریکی سفارت خانہ بند کرنے اور اس ملک سے امریکی سفیر کو باہر نکالنے کا مطالبہ شروع کردیا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close