عراق

عراق: کرکوک میں داعشی دہشت گردوں کے خلاف فوجی آپریشن کا دوسرا مرحلہ شروع

شیعت نیوز: عراق کی مسلح افواج کے ہیڈکوارٹر نے اعلان کیا ہے کہ صوبے کرکوک میں دہشت گردوں کے خلاف ابطال العراق نامی فوجی آپریشن کا دوسرا مرحلہ شروع کر دیا گیا۔

سومریہ نیوز کی رپورٹ کے مطابق عراق کی مسلح افواج کے ہیڈکوارٹر کے ترجمان یحیی رسول نے کہا ہے کہ عراق کے وزیر اعطم مصطفی الکاظمی کی ہدایات پر صوبے کرکوک میں ابطال العراق نامی فوجی آپریشن کا دوسرا مرحلہ منگل کے روز شروع کیا گیا ہے۔

مذکورہ ترجمان کے مطابق اس فوجی آپریشن کا مقصد امن و استحکام کو فروغ دینا، داعش دہشت گرد گروہ کے باقی بچے عناصر کا تعاقب اور ان کو گرفتار کرنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : عراق میں دہشت گردی کا بڑا منصوبہ ناکام، داعش سے وابستہ متعدد دہشت گرد گرفتار

واضح رہے کہ فوجی آپریشن کے دوسرے مرحلے کے آغاز کی خبر کے بعد عراق کے وزیر اعظم مصطفی الکاظمی خود کرکوک پہنچ گئے۔

اس فوجی آپریشن کا پہلا مرحلہ فروری میں صوبے الانبار میں انجام پایا تھا۔

دریں اثنا عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی کے کمانڈر طالب الموسوی نے صوبے دیالہ میں دہشت گرد عناصر کے خلاف کاروائی شروع کئے جانے کی خبر دی ہے۔

گذشتہ تین ماہ کے دوران عراق کے مختلف صوبوں میں داعش دہشت گرد گروہ کے باقی بچے عناصر کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوا ہے جس کی بنا پر صلاح الدین، دیالہ اور کرکوک نامی صوبوں میں فوج اور سیکورٹی اہلکاروں کے متعدد آپریشن انجام پا چکے ہیں اور آپریشن کا یہ سلسلہ بدستور جاری ہے۔

دوسری جانب عراقی فوج اور پولیس اہلکاروں نے سامرا میں اپنی مشترکہ کاروائی کے دوران داعش دہشت گرد گروہ کے بارہ عناصر کو گرفتار کر لیا۔

رپورٹ کے مطابق عراقی فوج اور پولیس اہلکاروں کی یہ مشترکہ کاروائی نہر رصاصی کے مشرقی علاقے میں انجام پائی جہاں داعش دہشت گرد عناصر کے سات ٹھکانوں کو تباہ اور تیار شدہ کئی‎ بموں کو ناکارہ بنا دیا گیا۔

عراق کی وزارت داخلہ نے بھی اعلان کیا ہے کہ سیکورٹی اہلکاروں نے صوبے الانبار کے شہر فلوجہ میں داعش دہشت گرد گروہ کے چار عناصر کو گرفتار کر لیا۔

صوبے کرکوک کی مشترکہ آپریشنل کمان نے بھی ایک کاروائی میں داعش دہشت گرد گروہ کے سات عناصر کی ہلاکت کی اطلاع دی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close