عراق

عراق کے صوبے دیالہ میں داعش دہشت گردوں کا حملہ ناکام

شیعت نیوز: عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے صوبے دیالہ میں داعش دہشت گرد عناصر کے حملہ کو ناکام بنا دیا۔ دوسری طرف کاطع الرکابی نے کہا ہے کہ امریکی افواج کے انخلاء پر قرارداد پر عملدرآمد مصطفی الکاظمی کی اولین ترجیح ہے۔

رپورٹ کے مطابق عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے منگل کے روز صوبے دیالہ کے علاقے خانقین پر داعش دہشت گرد عناصر کا حملہ ناکام بنا دیا۔

حشد الشعبی نے اسی طرح صوبے صلاح الدین کے شمال میں واقع حمرین کی پہاڑیوں اور اسی طرح عجیل اور علاس نامی تیل کے علاقوں سے دہشت گرد عناصر کا صفایا کر دیا۔

یہ بھی پڑھیں : عراق میں داعشی دہشت گردوں کا حملہ پسپا ، 15 دہشت گرد گرفتار

نینوا کے شمال میں بھی حشد الشعبی نے دہشت گردوں کے ایک خفیہ ٹھکانے پر حملہ کر کے ایک دہشت گرد کو گرفتار کر لیا۔

حالیہ چند روز کے دوران امریکہ اور سعودی عرب کے حمایت یافتہ داعش دہشت گرد گروہ کے عناصر عراق کے مختلف صوبوں میں سرگرم ہو گئے ہیں جن کے خلاف عراق کی عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی نے سخت کاروائی ہے۔

دوسری جانب عرب ای مجلے المعلومہ کو انٹرویو دیتے ہوئے عراق پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سکیورٹی و دفاع کے رکن کاطع الرکابی نے کہا ہے کہ قابض امریکی افواج کے انخلاء پر مبنی پارلیمانی قرارداد پر عملدرآمد نومنتخب وزیراعظم مصطفی الکاظمی کی اولین ترجیح ہے۔

کاطع الرکابی نے زور دیتے ہوئے کہا کہ امریکی درخواست کے مطابق آئندہ ماہ جون میں بغداد اور واشنگٹن کے درمیان اسٹریٹیجک تعاون کے معاہدے پر گفتگو کی جائے گی۔

عراقی پارلیمانی کمیٹی برائے قومی سکیورٹی و دفاع کے رکن نے کہا کہ وزیراعظم مصطفی الکاظمی نے قابض امریکی افواج کے انخلاء کے حوالے سے ایک نظام الاوقات ترتیب دے دیا ہے جس کی تفصیلات عنقریب ہی منظر عام پر آ جائیں گی۔

واضح رہے کہ جاری سال کے شروع میں امریکہ کی طرف سے ٹارگٹ کلنگ کی ایک کارروائی میں ایرانی سپاہ قدس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور عراقی حشد الشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابومہدی المہندس کے شہید کر دیئے جانے کے فورا بعد عراقی پارلیمنٹ نے اپنی سرزمین سے امریکی افواج کے فوری انخلاء کی قرارداد کو بھاری اکثریت کے ساتھ منظور کر لیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close