اہم ترین خبریںعراق

عراق میں امریکہ کے فوجی اڈوں پر ایک بار پھر راکٹوں سے حملے

شیعت نیوز: عراقی دارالحکومت بغداد کے جنوب میں واقع امریکی فوجی اڈوں پر راکٹ حملوں کی خبریں موصول ہوئی ہیں۔

بغداد میں عراقی فوج کی مشترکہ کمان کے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ دارالحکومت کے جنوب میں واقع بسمایہ نامی فوجی اڈے پر دو راکٹ لگے ہیں۔

بیان میں راکٹ حملوں کے نتیجے میں ہونے والے جانی یا مالی نقصان کی جانب کوئی اشارہ نہیں کیا گیا۔ اس فوجی اڈے کے ایک حصے کو امریکی فوج استعمال کرتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : امریکہ اور اتحادی فوج نے عراق کے متعدد فوجی اڈے خالی کرنے کا اعلان کر دیا

عراق کے دارالحکومت بغداد کے قریب امریکہ اور اتحادی افواج کے زیر استعمال التاجی فوجی اڈے پر ایک ہفتے میں تیسری بار راکٹ حملہ کیا گیا ہے۔

حملے کے شکار فوجی اڈے میں عراقی فوج کے علاوہ امریکی اور اتحادی افواج بھی قیام پذیر ہیں اور ایک ہفتے کے دوران اس فوجی اڈے پر تیسری بار راکٹ حملہ کیا گیا ہے ۔

اس سے قبل 12 مارچ کو اس فوجی بیس پر پہلے راکٹ حملے میں 3 امریکی فوجی ہلاک اور 12 زخمی ہوگئے تھے جب کہ 2 ہی دن بعد دوسرے حملے میں کم سے کم 20 سے زائد راکٹ داغے گئے تھے جس میں 5 اہلکاروں کے زخمی ہونے کی تصدیق کی گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں : عراق میں عدنان الزرفی عبوری حکومت تشکیل دینے پر مامور

اس حملے کی ذمہ داری عصبۃ الثائرین نامی گروپ نے قبول کی ہے جس کا نام اس سے پہلے کبھی عراقی میڈیا میں نہیں آیا۔ اس گروپ نے عراق میں امریکہ کے دیگر فوجی اڈوں پر بھی ایسے ہی حملوں کی دھمکی دی ہے۔

عراق میں امریکی دہشت گرد ایسے وقت میں موجود ہیں جب اس ملک کی پارلیمنٹ نے دوماہ قبل ایک قرارداد کے ذریعے امریکہ کے دہشت گرد فوجیوں کے انخلا کا مطالبہ کیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close