عراق

عراق: حشد الشعبی نے جنرل سلیمانی، المہندس کی شہادت کے 100 ویں دن کو منایا

شیعت نیوز: گزشتہ رات شہید قاسم سلیمانی و شہید ابومہدی المہندس کی شہادت کے سو دن پورے ہونے پر حشدالشعبی کی طرف سے بین الحرمین میں ایک تقریب منعقد کی گئی۔

ایران کی قدس فورس کے سابق کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل قاسم سلیمانی اور حشد الشعبی کے سابق ڈپٹی کمانڈر ابو مہدی المہندی کی شہادت کے 100 ویں دن ، تنظیم نے ایک بیان جاری کیا جس پر زور دیا گیا عراقی سیاستدانوں کے اتحاد کے لئے حکومت بنانے کی ضرورت ہے جو تمام عراقیوں کے مفادات کا تحفظ کرے۔

بیان میں مزاحمتی کمانڈروں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ان کے چلے جانے کے 100 دن گزر چکے ہیں ، لیکن وہ اب بھی ہمارے درمیان موجود ہیں ، یہ روشنی جو راستہ روشن کرتی ہے اور ہمیں راستہ دکھاتی ہے۔ آنکھیں جو ہمدردی کی نگاہ سے ہم پر نگاہ ڈالتی ہیں اور مصیبتوں کا مقابلہ کرنے میں ہماری مدد کرتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : عراقی سکیورٹی فورسز کی کارروائی میں داعش کے 23 دہشت گرد واصل جہنم

سپاہ قدس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس سے خطاب کرتے ہوئے بیان میں کہا گیا ہے کہ: ’’آپ کے بچے پورے دل اور ایمان اور ثابت قدمی کے ساتھ اپنے مقدس راہ پر گامزن ہیں۔ کبھی کمزور نہیں ہوئے اور ہم تمام شعبوں میں پوری طرح تیار ہیں۔‘‘

واضح رہے کہ شہید قاسم سلیمانی صیہونی و تکفیری ٹولے داعش کا قلع قمع کرنے والے محاذ میں بنیادی رکن کی حیثیت رکھتے تھے جنہیں امریکی دہشت گردوں نے بغداد ایئرپورٹ کے قریب تین جنوری کو انکے ساتھیوں کے ہمراہ شہید کر دیا تھا۔ شہید قاسم سلیمانی نےعراقی حکومت کی دعوت پر بغداد کا دورہ کیا تھا۔

شہید جنرل قاسم سلیمانی اور ابومہدی المہندس مغربی ایشیا کے علاقے میں داعش سمیت تکفیری دہشت گرد گروہوں کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر برسرپیکار تھے۔

جنرل قاسم سلیمانی اور عراق کی عوامی رضاکار فورس حشدالشعبی کے ڈپٹی کمانڈر ابومہدی المہندس کی شہادت کے بعد عراقیوں نے امریکی فورسز کے انخلا کا مطالبہ کیا اور عراقی پارلیمنٹ میں امریکی فوجیوں کے انخلا سے متعلق مسودہ قانون کی منظوری دی گئی۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close