اہم ترین خبریںعراق

عراقی اہل سنت مفتی کا بڑا فتویٰ، امریکی فوج کیلیے خطرے کی گھنٹی

عراقی اہل سنت مفتی نے امریکی فوج کیلیے خطری کی گنھٹی بجا دی

شیعت نیوز : عراقی دینی جماعت ’’جمعیت العلماء‘‘ کے سربراہ اور معروف اہل سنت مفتی شیخ خالد الملا نے ملک سے امریکی افواج کے فوری انخلاء کے بارے میں فتوی جاری کر دیا ہے۔

شیخ خالد الملا نے ٹوئٹر پر جاری ہونے والے اپنے پیغام میں لکھا ہے کہ ممکنہ مذاکرات میں ملک سے غیرملکی افواج کو فی الفور نکال باہر کر دیا جانا چاہئے کیونکہ اس خاص مسئلے میں کسی بھی قسم کی دیر جائز نہیں اور وہ بھی ایک ایسی صورت میں جب اس حوالے سے عراقی پارلیمنٹ نے از قبل ایک انتہائی واضح فیصلہ کر رکھا ہے۔

معروف عراقی اہل سنت مفتی شیخ خالد الملا نے لکھا کہ عراقی فوج اور حشد الشعبی ملکی سکیورٹی کو بطور احسن برقرار رکھنے کی پوری صلاحیت رکھتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : امریکی افواج کو نکال باہر کرنا، ملت عراق کا اسٹریٹیجک ہدف ہے۔ الفتح اتحاد

دوسری جانب عراقی وزیر اعظم نے ملک کے شمالی صوبے نینوا کے صدر مقام موصل کا دورہ اور قبائلی عمائدین اور معززین سے ملاقات کی ہے۔

عراقی ذرائع کے مطابق وزیر اعظم مصطفی الکاظمی کا یہ دورہ، موصل پر داعش کے قبضے کی برسی کے موقع پر انجام پایا ہے۔ قبائلی عمائدین اور معززین کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم مصطفی الکاظمی کا کہنا تھا کہ ملک میں شہریوں کی خواہشات کے مطابق نئے سیاسی نظام کے قیام کا راستہ ہموار ہو گیا ہے۔

انہوں نے بغداد واشنگٹن اسٹریٹجک مذاکرات کے آغاز کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اقتدار اعلیٰ اور قومی مفادات کا تحفظ امریکہ کے ساتھ ہونے والے مذاکرات میں ہماری اولیں ترجیح ہے۔

عراقی پارلیمنٹ نے امریکہ کے ساتھ مذاکرات کی نگرانی کے لیے خصوصی کمیٹی بھی قائم کر دی ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ عراق اور امریکہ کے درمیان مذاکرات میں سیکورٹی، سیاسی اور اقتصادی معاملات پر بات چیت کی جائے گی۔ عراقی پارلیمنٹ نے پانچ جنوری دو ہزار بیس کو ایک قرار داد منظور کر کے دہشت گرد امریکی فوج کے انخلا کا مطالبہ کیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close