عراق

عراقی عوام کا حکومت سے امریکی جارحیت کے خلاف فوری کارروائی کا مطالبہ

شیعت نیوز: عراق کی فوج اور سیاسی و مذہبی جماعتوں کی جانب سے حشد الشعبی کے مراکز پر امریکی جارحیت کی مذمت کا سلسلہ جاری ہے اور انہوں نے عراقی حکومت اور پارلیمنٹ سے مطالبہ کیا کہ امریکی جارحیت کے خلاف سخت کارروائی کرے۔

عراق کے الغدیر چینل کی رپورٹ کے مطابق عراقی پارلیمنٹ کے اسپیکر حمد الحلبوسی نے امریکہ کے دہشت گردانہ حملے کے خلاف اس ملک کی سیاسی جماعتوں کے رہنماوں کے فوری اجلاس بلانے اور عراق سے امریکی فوجیوں کے فوری انخلا کا مطالبہ کیا۔

عراق کی مسلح افواج نے بھی عراق میں عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر امریکی جنگی طیاروں کے حملے پہلے عراقی اور امریکی حکام کے مابین ہونے والی ہم آہنگی اور گفتگو سے متعلق امریکی دعووں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے حشد الشعبی کے مراکز پر امریکی جنگی طیاروں کے حملے کو کھلی امریکی جارحیت قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں : حشدالشعبی پر امریکی حملہ عراق کی قومی حاکمیت کے خلاف ہے۔ محمد الحلبوسی

عراقی پارلیمنٹ میں الفتح اتحاد اور مجلس اعلائے اسلامی نے علیحدہ علیحدہ بیان میں عوامی رضاکار فورس حشد الشعبی کے مراکز پر امریکی جنگی طیاروں کے حملے کی مذمت کرتے ہوئے اسے بزدلانہ اقدام قرار دیا۔

عراقی حزب اللہ کے ترجمان محمد محیی نے کہا ہے کہ امریکہ مختلف حیلے بہانوں سے عراق میں اپنی فوجی موجودگی کے درپے ہے۔ عراق کی متعدد شخصیات نے بھی حشد الشعبی کے مراکز پر امریکی جارحیت کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ واشنگٹن عراق میں فوجی کودتا کرنے کی کوشش میں ہے۔

دوسری طرف عراق کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ عراق کے وزیر خارجہ محمد علی الحکیم نے بغداد میں تعینات امریکہ اور برطانیہ کے سفیروں کو وزارت خارجہ میں طلب کرکے حشد الشعبی کے ٹھکانوں پر امریکہ کے جنگی طیاروں کی بمباری پر شدید اعتراض کیا ہے۔

عراقی وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ عراق میں امریکی اقدامات عراقی اور بین الاقوامی قوانین کی صریح خلاف ورزی ہیں۔

اطلاعات کے مطابق امریکہ جنگی طیاروں نے آج صبح کربلا کے زیر تعمیر ايئر پورٹ اور حشد الشعبی کے متعدد ٹھکانوں پر بمباری کی ۔ جس کے نتیجے میں3 افراد شہید اور متعدد زخمی ہوگئے۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ اس نے بغداد کے قریب التاجی علاقہ میں امریکی فوجی اڈے پر راکٹوں کے حملے کے جواب میں حشد الشعبی کے ٹھکانوں پر بمباری کی جبکہ التاجی پر حملے کی ذمہ داری کسی گروہ نے قبول نہیں کی۔

واضح رہے کہ رائٹرز نے امریکی حکام کے حوالے سے دعوی کیا ہے کہ امریکی حملہ بدھ کی رات امریکہ کے فوجی اڈے التاجی میں ہونے والے راکٹ حملے پر کیا گیا۔ التاجی حملے میں امریکہ اور برطانیہ کے 4 فوجی ہلاک اور 26 دیگر فوجی زخمی ہوئےتھے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close