اہم ترین خبریںعراق

عراقی عوام نے برطانوی سفیر اسٹیفن ہکی کو شٹ اپ کال دے دی

شیعیت نیوز : عراق میں موجود برطانوی سفیر کی جانب سے عراق کے اندرونی معاملات میں مداخلت پر عراقی عوام نے برطانوی سفیر کو اسٹیفن ہکی کو شٹ اپ کال دے دی۔

تفصیلات کے مطابق عراق میں تعینات برطانوی سفیر اسٹیفن ہکی (Stephen Hickey) نےعراق کے اندرونی معاملات میں مداخلت اور عراق کے سرکاری دورے پر بغداد میں موجود ایرانی ویر خارجہ محمد جواد ظریف کی توہین پر مبنی ٹوئیٹ کی جس پر عراقی عوام نے شدید رد عمل دیا۔

برطانوی سفیر کے عراقی اندرونی معاملات میں مداخلت پر مبنی پیغام کا جواب دیتے ہوئے حنان حامد نامی ایک یوزر نے لکھا کہ جناب سفیر! آپ اور آپ کے اتحادی بخوبی جانتے ہیں کہ عراق کے اندر دیکھے جانے والے آپ کے خوابوں کے شرمندۂ تعبیر ہونے میں کون لوگ رکاوٹ ہیں۔ اس یوزر نے لکھا کہ آپ کے (مذموم) خوابوں کو پورا ہونے سے روکنے والی عالمی شیعہ قوم ہے۔۔ جی ہاں! آپ اپنی لوٹی ہوئی دولت، زہریلے پراپیگنڈے اور ہمارے کرپٹ سیاستدانوں کے ذریعے ہماری صفوں میں اختلافات تو ضرور ڈال سکتے ہیں لیکن اپنے مذموم خوابوں کو ہر گز شرمندۂ تعبیر نہیں کر سکتے کیونکہ ہم آپ کے مذموم ارادوں کے سامنے سینہ تانے کھڑے ہیں۔

عراقی عوام کی جانب سے برطانوی سفیر کو شٹ اپ کال دیتے ہوئے SHUTUP_British_Ambassador اور فلیخرس_السفیر_البریطانی ٹرینڈز چلائے گئے۔

یہ خبر بھی پڑھیں عراق اور ایران کا بین الاقوامی فورمز میں جنرل سلیمانی کے قتل کیس کو اٹھانے کا اعلان

عراق میں برطانوی سفیر کے شرانگیز پیغام پر عوام کے علاوہ معروف عراقی شخصیات نے بھی شدید ردعمل ظاہر کیا ہے جن میں عراقی پارلیمنٹیرین و پارلیمانی اتحاد "الصادقون” کے رکن نعیم العبودی بھی شامل ہیں۔

انہوں نے اپنے جوابی پیغام میں برطانوی سفیر کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ لگتا ہے کہ عراق میں زیادہ دیر قیام کرنے کے باعث آپ کو سفارتی سرحدیں پھلانگنے کی جرأت حاصل ہو گئی ہے۔ ڈاکٹر نعیم العبودی نے لکھا کہ آپ کے لئے میری نصیحت یہ ہے کہ میرے ملک کی خودمختاری کا احترم کرتے ہوئے اپنے سفارتی کام کو جاری رکھیں اور (ملک کے) اندرونی معاملات میں مداخلت کر کے عراقی عوام کے غیض و غضب کو بھڑکاوا نہ دیں۔ انہوں نے اپنے پیغام میں لکھا کہ عراق کی وہ مضبوطی اور استحکام مطلوب ہے جو عراقی سپوتوں کے مطابق ہو نہ کہ وہ جو آپ کے خوابوں کے مطابق ہے۔

دوسری طرف عراقی سرکاری افواج میں شامل عوامی مزاحمتی تحریک "النجباء” کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل مہندس نصر الشمری نے بھی اپنے جوابی پیغام میں برطانوی سفیر کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا کہ کیا عراق کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ آپ کے ملک میں اپنے 20 فوجی اڈے بنا لے اور ایسا سفارتخانہ رکھے جس میں ہزاروں عراقی فوجیوں سمیت 15 ہزار غیر فوجی کارکن بھی موجود ہوں جو "لندن” کے عین وسط میں اپنی فوجی مشقیں بھی انجام دیں؟ ڈپٹی سیکرٹری جنرل النجباء نصر الشمری نے برطانوی سفیر کو نصیحت کرتے ہوئے لکھا کہ فریب دینا اور جھوٹ بولنا بند کر دیجئے اور اپنے کام سے کام رکھتے ہوئے، اپنے اور اپنے بھیجنے والوں سے بڑے کاموں کے اندر مداخلت چھوڑ دیجئے۔

واضح رہے کہ عراق اور شام میں داعش کی بدترین شکست کے بعد امریکہ، اسرائیل اور برطانیہ سمیت داعش کےتمام سہولتکار ممالک شدید جھججھلاہٹ کا شکار ہیں اور اس طرح کی حرکتوں سے اپنی شکست کا بدلہ لینے کی کوشش کرتے ہیں تاہم عوام کی جانب سے شدید رد عمل اس بات کا ثبوت ہے کہ ان ممالک کےی دھوکہ دہی سے عوام واقف ہوچکے ہیں ۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close