عراق

عراقی صدر اور سیاسی دھڑوں کی نو منتخب وزیراعظم الکاظمی کی حمایت کا اعلان

شیعت نیوز: عراق کے نو منتخب وزیراعظم مصطفی الکاظمی نے پارلیمنٹ سے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے بعد، باقاعدہ طور پر کام شروع کردیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق کل رات اعتماد کے ووٹ کے لئے پارلیمنٹ کا اجلاس عراق کے مقامی وقت کے مطابق رات 9 بجے بلایا گیا تھا تاہم مختلف سیاسی اتحاد کے مابین پائے جانے والے اختلافات کی وجہ سے اجلاس رات 12 بجے شروع ہوا۔ اجلاس کے دوران مصطفی الکاظمی کو 329 کے ایوان میں 233 ووٹ ملے۔

اجلاس کے دوران نوری المالکی کی قیادت میں حکومتِ قانون الائنس کے نمائندوں کے سوا کل 21 وزارت خانوں میں سے 15 وزارت خانوں کے تجویز کردہ وزراء کو اعتماد کا ووٹ دیا گیا جبکہ 4 تجویز کردہ وزراء کے ناموں سے موافقت نہیں کی گئی۔

یہ بھی پڑھیں : حضرت خدیجہ ؓنےرسالت مآبؐکے شانہ بشانہ ہر محاذ پر دین کی بقاء اور اسلام کی سلامتی کیلئے عملی جدوجہد کی، علامہ شہنشاہ نقوی

اس اجلاس کے دوران وزیر خارجہ اور وزیر پٹرولیم کے تجویز کردہ وزیروں کے نام پر پائے جانے والے اختلافات کے باعث اگلے اجلاس میں اس حوالے سے فیصلہ کیا جائے گا۔

دوسری جانب عراقی صدر نے ملک کی تمام سیاسی جماعتوں اور پارلیمانی دھڑوں سے اپیل کی ہے کہ وہ نو منتخب وزیراعظم مصطفی الکاظمی کی حکومت کی بھرپور حمایت کریں۔

اپنے ایک ٹوئٹ میں عراق کے صدر برھم صالح نے یہ بات زور دے کر کہی ہے کہ ملک کو درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے مصطفی الکاظمی کی کابینہ کی تکمیل ضروری ہے۔ انہوں صحت کے مسائل، اقتصادی مشکلات، سیکورٹی معاملات، قانونی اصلاحات اور نئے انتخابات کے انعقاد کو ملک کے اہم ترین مسائل اور چیلنج قرار دیا ہے۔

عراقی پارلیمنٹ کے سربراہ محمد الحلبوسی نے بھی اقتصادی اور سیکورٹی مسائل کو نو منتخب وزیراعظم مصطفی الکاظمی کے سامنے اہم ترین چیلنج قرار دیتے ہوئے تمام سیاسی دھڑوں سے اپیل کی وہ نئی حکومت کے ساتھ بھرپور تعاون کریں۔

قومی حکمت پارٹی کے سربراہ سید عمار حکیم نے بھی تمام سیاسی جماعتوں سے نئی حکومت کے ساتھ تعاون کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ صحت و سلامتی اور اقتصادی و سماجی چیلنجوں کا مل کر مقابلہ کیا جاسکتا ہے۔ سید عمار حکیم نے نئے وزیر اعظم پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کی پریشانیوں پر بھی توجہ دیں اور ان کے جائز مطالبات پورے کرنے کی کوشش کریں۔ انہوں نے کہا کہ نئے وزیر اعظم کو اقتصادی مشکلات کے حل اور کورونا کی صورتحال سے نمٹنے پر بھی توجہ دینا ہوگی۔

مصطفیٰ الکاظمی نے بدھ کی شام بائیس رکنی کابینہ کا اعلان اور وزرا کے ناموں کی فہرست اعتماد کا ووٹ حاصل کے لیے پارلیمینٹ کو پیش کی تھی۔ بدھ کی رات دیر گئے تک جاری رہنے والے اجلاس کے دوران پارلیمنٹ نے بائیس میں سے پندرہ وزرا کو اعتماد کا ووٹ دے دیا۔

وزیراعظم مصطفی الکاظمی کی کابینہ کے باقی وزرا اعتماد کا ووٹ حاصل نہ کرسکے جبکہ وزیر خارجہ اور وزیر پیٹرولیم کے ناموں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ مصطفیٰ الکاظمی عراق کے کارگزار وزیر اعظم عادل المہدی کی جگہ وزارت عظمیٰ کا عہدہ سنبھالیں گے کہ جنہوں نے گزشتہ برس انتیس نومبر کو استعفیٰ دے دیا تھا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close