عراق

عراقی صدر برہم صالح نے امریکی عہدیداروں سے ملاقات کی تردید کردی

شیعت نیوز: عراقی صدر کے دفترکی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر برہم صالح نے کسی بھی امریکی عہدہ دار سے ملاقات نہیں کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق عراقی صدر کے دفترسے جاری بیان میں برہم صالح کی امریکی اعلی حکام سے ملاقاتوں کی خبروں کو من گھڑت اور بے بنیاد قرار دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : عراقی حزب اللہ کی امریکہ کو دھمکی، داعش کا ایک سرغنہ گرفتار

عراقی ذرائع کا کہناہے کہ ہفتے کے روز صوبہ الانبار میں صدر برہم صالح نے کسی امریکی یا غیر ملکی عہدیدار سے ملاقات نہیں کی۔

عراقی حکام نے ایسی خبروں کی اشاعت پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس قسم کی خبروں کی اشاعت میں محتاط رہیں۔

عراقی ذرائع نے خبر دی تھی کہ امریکی وزیر دفاع نےعراق کا خفیہ دورہ کیا تھا۔

ذرائع کا کہناتھا امریکی اعلی حکام کے دورہ عراق کا مقصد کہ پیٹریاٹ سسٹم کی تنصیب اور امریکی اتحادی افواج سے مشاورت کرنا تھا۔

میڈیا نے دعوی کیا تھا کہ ان دونوں امریکی عہدے داروں نے عراق کے دورے کے دوران صدر برہم صالح ، پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد الحلبوسی اور نئے نامزد وزیراعظم مصطفی الکاظمی سے ملاقات کی تھی۔

واضح رہے کہ ہفتے کے بعض ذرائع نے اطلاع دی تھی کہ امریکی سکریٹری دفاع مارک اسپر اور امریکی نائب صدر مائیک پینس غیر متوقع طور پر صوبہ الانبار کے عین الاسد ہوائی اڈے پر پہنچے تھے۔

ذرائع کے مطابق امریکی وزیر دفاع نے عراق کے صدر برہم صالح اور عراق کی پارلیمنٹ کے اسپیکر کے ساتھ ملاقات اور گفتگو کی۔

یاد رہے کہ عین الاسد عراق میں امریکہ کا اہم فوجی اڈہ ہے۔ اسلام کے عظيم کمانڈر شہید قاسم سلیمانی کی امریکہ کے ہاتھوں عراق میں شہادت کے بعد ایران نے امریکہ کے اسی فوجی اڈے پرایک درجن سے زائد میزائل داغے تھے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close