ایران

اسلامی ممالک کو عرب امارات اور اسرائیل کی سازش کا مقابلہ کرنا چاہیے۔ باقر قالیباف

شیعت نیوز : ایرانی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے اسلامی ممالک سے مطالبہ کیا کہ پوری بین الاقوامی اور علاقائی صلاحیتوں کو بروئے کار لائے، یکجہتی اور اتحاد کے ساتھ کوشش کرکے فلسطینی عوام کے خلاف ’’سیاسی دہشت گردی‘‘ کو ناکام بنائے۔

ایران کی پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف نے اسلامی ممالک کے پارلیمانی سربراہان کے نام ایک خط میں مطالبہ کیاہے کہ اسلامی ممالک کی اسمبلیوں کو متحدہ عرب امارات اوراسرائیل کی گہری سازش کا مقابلہ کرنا چاہیے۔

انہوں نے صیہونیوں کے ساتھ تعلقات معمول پر لانے کے بارے میں متحدہ عرب امارات کے معاہدے کو ابو ظہبی کی ’’اسٹریٹجک غلطی‘‘ قرار دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : کچھ دیر میں بڑے عسکری آپریشن کا اعلان کریں گے، یمنی مقاومتی فورس

قالیباف نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اور صیہونیوں کے درمیان معاہدہ تمام اسلامی ممالک، اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) اور پارلیمانی یونین کی تمام کوششوں کو کمزور کرنے کا باعث بنے گا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ بلاشبہ فلسطینی قوم کا مستحکم ارادہ اور مزاحمت تاریخی فلسطینی سرزمین کو آزاد کر سکتا ہے۔

ایرانی اسپیکر نے اپنے پیغام میں فلسطینی عوام کے ناجائز حقوق کی خلاف ورزی کرنے والے کسی بھی اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی ممالک کی تمام اسمبلیوں کو اس شرمناک معاہدے کی مخالفت اور روک تھام کے لئے تمام پارلیمانی اقدامات اور اقدامات کا استعمال کرنا چاہئے اور فلسطینیوں کے ناقابل تسخیر حقوق کو برقرار رکھنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ متحدہ عرب امارات اور صیہونیوں کے ساتھ تعلقات کو معمول لانے کا مقصد فلسطین کے مظلوم عوام کے ناجائز حقوق کے حصول کے عملی اور سنجیدہ اقدامات کو کمزور کرنا ہے، سات دہائیوں سے زیادہ عرصے تک اس سرزمین کے بزرگ افراد نے فلسطین اور القدس شریف کی سرزمین پر قبضہ کرنے والوں کے ساتھ کسی بھی سمجھوتہ کو مسترد کرتے ہوئے ان کی تاریخ ، ثقافت اور اصلیت کا تحفظ کیا ہے اور القدس کے مقصد کے لئے بہت قربانی دی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close