دنیا

اسرائیلی الیکشن کمیشن کا تین ہفتوں کے اندر اندر دوبارہ انتخابات کرانے پر زور

شیعت نیوز : اسرائیلی الیکشن کمیشن نے حکومت کی تشکیل میں ناکامی کے بعد موجودہ پارلیمنٹ اور سیاسی جماعتوں پر زور دیا ہے کہ وہ تین ہفتوں کے اندر اندر دوبارہ انتخابات کرائیں۔

عبرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیلی الیکشن کمیشن کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر اورلی عدس کا کہنا ہے کہ امکان ہے کہ آئندہ سال فروری میں کنیسٹ کے دوبارہ انتخابات کا انعقاد کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیلی بستیوں کی تعمیرغیرقانونی ہے : اقوام متحدہ

ادھر بلیو وائٹ پارٹی کے پارلیمانی بلاک کے چیئرمین آوی نزانکورن نے کہا ہے کہ ان کی جماعت نئے انتخابات میں حصہ لینے کے لیے تیار ہے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ اگر ان کی جماعت کنیسٹ کے 61 ارکان کی حمایت حاصل کرنے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو ہم الیکشن کی طرف جانے کے بجائے نئی حکومت تشکیل دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں : عرب اتحاد نے اسرائیلی حکومت میں شامل ہونے کی پیش کش مسترد کردی

اسرائیل کی بڑی سیاسی جماعتیں نیتن یاھو کی سربراہ میں قائم لیکوڈ اور سابق آرمی چیف جنرل ریٹائرڈ بینی گینٹز کی بلیو وائٹ کی قیادت ایک دوسرے پر حکومت کی تشکیل میں رکاوٹ ڈالنے کا الزام عائد کرتی ہے۔

اسرائیل میں رواں سال اپریل میں ہونے والے کنیسٹ کے انتخابات میں کوئی جماعت حکومت تشکیل نہیں دے سکی جس کے بعد 17 ستمبرکو دوبارہ انتخابات کرائےگئے۔ دوسری بار کے انتخابات میں بھی اسرائیل میں حکومت کی تشکیل نہیں کی جاسکی۔ حکومت کی تشکیل میں ناکامی پر بڑی جماعتیں ایک دوسرے کو مورد الزام ٹھہرا رہی ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close