اہم ترین خبریںسعودی عرب

اسرائیلی ایما پر سعودی عدالتوں میں 40 بے گناہ فلسطینیوں کے خلاف عدالتی کارروائی

شیعت نیوز: سعودی عرب کی عدالتوں میں گذشہ برس اپریل میں گرفتار کیے گئے 40 بے گناہ فلسطینیوں کے خلاف مقدمہ کی کارروائی کا باقاعدہ آغاز کردیا گیا ہے۔

فلسطینی نیوز ایجنسی ’’قدس پریس‘‘ کی رپورٹ کے مطابق اتوار8 مارچ کو سعودی عرب میں قید 40 بے گناہ فلسطینیوں کو فوج داری عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں : اقتدار کی ہوس، محمد بن سلمان نے اپنے ہی سگے چچا سمیت تین شاہی حکام کو گرفتار کرلیا

اسیران کے قریبی ذرائع کا کہنا ہے کہ ابھی تک اسیران کو ان کے خلاف عائد کردہ الزامات کے بارے میں نہیں بتایا گیا۔ دوسری طرف اسیران کے اقارب اپنے رشتہ داروں کی طرف سے وکلاء کے حصول کی کوشش کررہے ہیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ برس سعودی عرب میں پولیس نے 60 فلسطینیوں کو حراست میں لیا۔گرفتاری کے بعد ان میں سے چند ایک کو رہا کیا گیا جب کہ باقی زیرحراست افراد کو غیرانسانی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : اسلام کے ٹھیکیدار ممالک سعودی عرب و امارات مودی کی دہشتگردی پر خاموش

سعودی عرب میں فلسطینی اور اردنی قیدیوں کے اقارب پرمشتمل کمیٹی کے چیئرمین خضر المشائخ نے قدس پریس کو بتایا کہ اردنی حکومت کو الریاض میں اپنے سفارت خانے کو سعودی عدالتوں میں ٹرائل کے موقعے پراپنے مندوبین کو بھیجنا چاہیے۔

المشائخ نے مطالبہ کیا کہ سعودی عرب میں جتنے بھی فلسطینیوں کو گرفتار کیاگیا ان پرکوئی ٹھوس الزام عائد نہیں کیا جاسکتا۔ وہ سعودی عرب میں کسی قسم کے جرم میں ملوث نہیں رہے ہیں۔

قدس پریس کو ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ سعودی عرب میں جن فلسطینی رہنماؤں کا ٹرائل شروع کیا گیا ہے ان میں 18 سالہ ڈاکٹر محمد الخضری، ان کے صاحب زادے 49 سالہ ھانی الخضری اور دیگر سینیر رہنما شامل ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close