مقبوضہ فلسطین

اسرائیلی فوج کی بربریت، 19 فلسطینیوں سے ان کی آنکھوں سے محروم کردیا۔

شیعت نیوز: اسرائیل میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ایک ادارے بتسلیم کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج نے احتجاج کرنے والے فلسطینی مظاہرین کی آنکھوں کو نشانہ بناتے ہوئے 19 فلسطینیوں کو ان کی آنکھوں سے محروم کردیا۔

رپورٹ کے مطابق انسانی حقوق گروپ ’’بتسلیم‘‘ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دو سال کے دوران غزہ کی مشرقی سرحد پر احتجاج کرنے والے 19 فلسطینیوں کی آنکھوں پرگولیاں مار کر انہیں آنکھوں سے محروم کردیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں : فلسطینی راکٹ حملوں سے اسرائیلی فوج کو 20 ملین ڈالرز کا نقصان

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے آنکھوں سے محروم ہونے والے فلسطینیوں میں سماجی کارکن، عام شہری اور صحافی بھی شامل ہیں۔

دوسری طرف اسرائیلی فوج نے بیت المقدس میں عرب اسٹڈی سینٹر کے ڈائریکٹر خلیل تفکجی کو ان کے گھر سے حراست میں لے لیا۔ اسرائیلی پولیس نے بیت المقدس میں القدس میں ایوان صنعت وتجارت کے چیئرمین کمال عبیدات کے گھر پربھی چھاپہ مارا۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیلی فوج کا شہید فلسطینی کی لاش کی بے حرمتی ناقابل معافی جرم ہے۔حزب اللہ

بیت المقدس کے ایک مقامی ذرائع نے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے خلیل تفکجی کو حراست میں لینے کے ساتھ ان کے گھر میں توڑپھوڑ کی، اس کے علاوہ کمال عبیدات کے گھر میں بھی تلاشی کی آڑ میں توڑپھوڑ کی گئی۔

واضح رہے کہ اسرائیلی فوج کی براہ راست فائرنگ سے 200 فلسطینی شہید اور 8 ہزار زخمی ہوئے۔ 2400 فلسطینی دھاتی گولیوں سے جب کہ تین ہزار فلسطینی آنسوگیس کی شیلنگ سے زخمی ہوئے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close