دنیا

اسرائیلی مظاہرے، صیہونی وزیراعظم نیتن یاہو کے تابوت پر آخری کیل ثابت ہو رہے ہیں

شیعت نیوز : مقبوضہ فلسطین کے ہزاروں صیہونیوں نے گزشتہ شب بھی صیہونی وزیراعظم نیتن یاہو کی مالی بد عنوانیوں کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے ان کی فوری برطرفی کا مطالبہ کیا۔

ٹائمز آف اسرائیل نے رپورٹ دی ہے کہ تل ابیب کی بالفور اسٹریٹ پر واقع صیہونی وزیر اعظم کے گھر کے سامنے ہزاروں مظاہرین نے اکٹھا ہو کر بدعنوانیوں میں ملوث نیتن یاہو کے استعفے کا مطالبہ کیا۔

مظاہرین کے ہاتھوں میں پلے کارڈ تھے جن پر ’’ نیتن یاہو استعفیٰ دو‘‘ اور ’’نیتن یاہو ہمارے لئے باعث شرم ہے‘‘ جیسے نعرے درج تھے۔ پولیس نے اس موقع پر مظاہرین کو اپنے محاصرے میں لے لیا۔ مظاہروں کے دوران سکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ ہونے والی جھڑپوں میں پر تشدد واقعات بھی رونما ہوتے ہیں۔ اب تک سیکڑوں افراد زخمی یا گرفتار ہو چکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : غزہ میں اسرائیلی ٹینکوں کی ایک بار پھر گولہ باری، مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی

واضح رہے کہ ایک صیہونی کورٹ نے اکیس نومبر کو، مالی بدعنوانیوں، اختیارات کے ناجائز استعمال اور دھوکہ دھی کے الزامات کے تحت صیہونی وزیر اعظم نیتن یاہو پر باضابطہ فرد جرم بھی عائد کر دی ہے۔

کئی ہفتوں سے تل ابیب میں صیہونی وزیراعظم نیتن یاہو کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے اور آئے دن نیتن یاہو کے خلاف ایک بڑے مظاہرے کی خبر ذرائع ابلاغ کی سرخیوں میں آ جاتی ہے۔ مظاہروں کے دوران سکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ ہونے والی جھڑپوں میں پر تشدد واقعات بھی رونما ہوتے ہیں۔ اب تک سیکڑوں افراد زخمی یا گرفتار ہو چکے ہیں۔

ایک صیہونی کورٹ نے اکیس نومبر کو، مالی بدعنوانیوں، اختیارات کے ناجائز استعمال اور دھوکہ دھی کے الزامات کے تحت صیہونی وزیراعظم نیتن یاہو پر باضابطہ فرد جرم بھی عائد کر دی ہے۔

نیتن یاہو کو ریاستی سودوں میں بدعنوانیوں کے چار بڑے مقدمات کا سامنا ہے جن کی مجموعی مالیت کئی ارب ڈالر بتائی جاتی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close