مشرق وسطی

جارح ڈرون طیاروں کے خلاف شامی اینٹی ائیرکرافٹ کی کارروائی

شیعت نیوز : شام کی فوج نے صوبے لاذقیہ کے شہر جبلہ کی فضا میں جارح ڈرون طیاروں کے خلاف کارروائی کی ہے۔ دوسری طرف شامی شہر دیرالزور میں امریکہ مخالف احتجاجی مظاہرے کئے گئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی سانا کی رپورٹ کے مطابق یہ جارح ڈرون طیارے حمیمیم روسی فوجی اڈے پر حملہ کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

ستمبر دو ہزار پندرہ سے روس، شام میں دہشت گردی کے خلاف تعاون کرتے ہوئے حمیمیم فوجی اڈے کو استعمال کرنے کے علاوہ اپنے بحری یونٹوں یہاں تک بحری آبدوز نیز اپنے لڑاکا طیاروں کو استعمال کر رہا ہے۔

دوسری جانب شامی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کے مطابق امریکہ کی جانب سے شام پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کئے جانے کے جواب میں شامی شہر دیرالزور میں امریکہ مخالف احتجاجی مظاہرے کئے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی بادشاہت کی جنگ، محمد بن سلمان کے حوالے سے واشنگٹن پوسٹ کا تہلکہ خیز انکشاف

امریکی پابندیوں کے خلاف ہونے والے ان احتجاجی مظاہروں میں شریک احتجاجی مظاہرین نے پلے کارڈز اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر امریکی اقتصادی دہشتگردی کے خلاف نعرے درج تھے۔

احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے معروف شامی شخصیات نے امریکی پابندیوں سمیت ملک کے خلاف کسی بھی دباؤ کے مقابلے میں ملکی سیاست کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا اور کہا کہ امریکہ جو شام پر تکفیری دہشت گردی مسلط کرنے میں ناکام ہو گیا ہے، اب غیور شامی قوم کو اقتصادی پابندیوں کے ذریعے گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کرنا چاہتا ہے۔

شہر دیرالزور کے محکمہ اوقاف کے سربراہ مختار العزی النقشبندی نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے امریکہ کی جانب سے شام پر لگنے والی نئی پابندیوں کی شدید مذمت کی اور کہا کہ امریکی پراپیگنڈے کے برعکس، ’’قیصر ایکٹ‘‘ قانون ہے نہ ہی اس کا بین الاقوامی قوانین کے ساتھ کوئی تعلق ہے۔

انہوں نے کہا کہ مذکورہ بالا نام سے شام اور شامی قوم کے خلاف امریکی سازش کی ایک اور کڑی تیار کی گئی ہے۔

مختار العزی النقشبندی نے کہا کہ پوری دنیا کو یہ جان لینا چاہئے کہ ہماری عوام نے اپنی خاک اور ناموس کے دفاع کی خاطر اپنا خون دیا ہے اور یہ قوم اپنے اوپر لگنے والی نئی پابندیوں کے سامنے کسی طور جھکنے والے نہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close