اہم ترین خبریںپاکستان

ملک بھرمیں جلوس شہادت امام علیؑ اختتام پذیر،احتیاطی تدابیر پرعمل اور نظم وضبط کا بہترین مظاہرہ

کورونا وائرس کی عالمی وبا عزاداری کی راہ میں حکومتی رکاوٹوں کے باوجودعزاداران امام علی ؑ نے حکومتی ایس اوپی،ماہرین طب کی ہدایات اور احتیاطی تدابیر پر عمل کرکے پوری پاکستانی قوم کے سامنے نظم وضبط کا بہترین مظاہرہ کیا اور ایک اعلیٰ مثال کردی ہے ۔

شیعت نیوز: ملک بھرمیں ایام شہادت حضرت امام علی ؑ پر مجالس عزااور جلوس ہائے عزاکا بھرپور انعقاد کیا گیا، تمام جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتے ہوئے اپنی اپنی منزل مقصودپر پہنچ کر اختتام پذیر ہوگئے ہیں ۔کورونا وائرس کی عالمی وبا عزاداری کی راہ میں حکومتی رکاوٹوں کے باوجودعزاداران امام علی ؑ نے حکومتی ایس اوپی،ماہرین طب کی ہدایات اور احتیاطی تدابیر پر عمل کرکے پوری پاکستانی قوم کے سامنے نظم وضبط کا بہترین مظاہرہ کیا اور ایک اعلیٰ مثال کردی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: یورپی پارلیمنٹ کا ایران اور دیگر ممالک کے خلاف عائد پابندیوں کے خاتمے کا مطالبہ

تفصیلات کے ملک بھرمیں نکالےگئےشہادت امیر المومنین حضرت امام علی ؑ کے جلوس پر امن طور پر اختتام پذیر ہوگئے ہیں ۔ کراچی کا مرکزی جلوس نشتر پارک سے برآمد ہوااور اپنے روائتی راستوں سے گزرکر حسینیہ ایرانیان کھارادر پر اختتام پذیر ہوا۔مجلس عزا صبح سات بجے شروع ہوئی جس سے نامور عالم دین علامہ سید شہنشاہ حسین نقوی نے خطاب کیا۔ مجلس وجلوس میں شریک عزاداران نے احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کرتے ہوئے فیس ماسک، ہینڈ سینی ٹائزرز ، گلوز کا استعمال کیا۔ دوران مجلس اور جلوس سماجی فاصلوں کا خصوصی خیال رکھا گیا۔ جبکہ اسکاوٹس رضا کار دوران مجلس وجلوس مسلسل اینٹی کورونا سپرے کرتے رہے ۔

یہ بھی پڑھیں: کراچی اور شکارپور سے گرفتار عزادار رہانہ ہوئے تو وزیر اعلیٰ ہاؤس کا گھیراؤکریں گے،علامہ باقرزیدی

لاہور کا مرکزی جلوس مبارک حویلی سے برآمد ہوا اور اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا کربلا گامے شاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوا۔ جلوس میں شریک تمام عزاداروں نے ایس اوپیز کی مکمل پابندی کی ۔ تمام عزداروں نے سماجی فاصلوں کا خیال رکھتے ہوئے فیس ماسک، ہینڈ سینی ٹائزرز ، گلوز کا استعمال کیاجبکہ اسکاوٹس رضا کار دوران مجلس وجلوس مسلسل اینٹی کورونا سپرے کرتے رہے ۔

یہ بھی پڑھیں: تمام ترحکومتی سازشوں کے باوجود کراچی میں مرکزی جلوس یوم علیؑ کا انعقاد، نظم وضبط کی اعلیٰ مثال قائم

جبکہ سکھر، خیر پور، راولپنڈی ، حیدرآباد، ڈیرہ اسماعیل خان، ہنگو، کوہاٹ، پاراچنار، گلگت بلتستان سمیت ملک کے دیگر چھوٹے بڑے شہروں ، قصبوں اور دیہاتوں میں بھی احتیاطی تدابیر اور سماجی فاصلوں کو پیش نظررکھتے ہوئےمجالس اور جلوس ہائے شہادت مولاعلیؑ کا انعقاد کیا گیا ۔تکفیری عناصر کے دباؤ اور ایماپر جلوس ہائے عزا روکنے کی سر توڑ کوششیں کیں لیکن شیعیان حیدر کرار ؑ نے ایک مرتبہ ثابت کردیا کہ وہ ایک منظم قوم ہیں اور ہمیشہ ملک کے قانون اور آئین کی پابندی کو اپنا شعار سمجھتی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close