سعودی عرب

جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث 20 سعودی ملزم اہلکاروں پر مقدمہ کا آغاز

شیعت نیوز : ترکی کی عدالت نے سعودی صحافی جمال خاشقجی کے قتل میں ملوث سعودی عرب کے 20 مجرم اہلکاروں کے خلاف مقدمے کی کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔

جمال خاشقجی کے قتل کا مقدمہ سعودی مشتبہ افراد کی عدم موجودگی میں چلایا جارہا ہے، سعودی ملزمان پر جان بوجھ کر اور بہیمانہ طریقے سے قتل کا الزام عائد کیا گیا تھا اور استغاثہ نے ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے تھے۔

جن بیس سعودی شہریوں پر مقدمہ چلایا جا رہا ہے ان میں سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دو سابق اعلیٰ مشیر بھی شامل ہیں۔

جمال خاشقجی کو 12 اکتوبر 2018 میں استنبول میں سعودی قونصل خانے میں وحشیانہ طور پرقتل کیا گیا تھا۔

جمال خاشقجی جن کے پاس امریکی شہریت بھی تھی وہ ترکی میں سعودی سفارت خانے میں اپنی شادی کے سلسلے میں کچھ ضروری دستاویزات حاصل کرنے کے لیے گئِے تھے۔

یہ بھی پڑھیں : سعودی عرب میں کورونا وائرس بے قابو ، ایک دن میں ریکارڈ 4193 کیسز کا اضافہ

اے ایف پی کے مطابق خاشقجی کی منگیتر خدیجہ چنگیز اقوام متحدہ کے ماورائے عدالت ہلاکتوں کو قلم بند کرنے والے خصوصی نمائندے ایگنس کالامرڈ کے ہمراہ اس مقدمے کی سماعت کے دوران موجود تھیں۔

اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندہ کالامرڈ کا کہنا ہے کہ خاشقجی کا قتل ایک سوچے سمجھے منصوبہ کا حصہ تھا اور ایک ماورائے عدالت قتل ہے جس کی ذمہ دار سعودی حکومت ہے۔

ترک استغاثہ نے احمد الانصادی اور سعود القتانی پر اس قتل کی سازش کرنے اور اس پر عمل کروانے کا الزام عائد کیا ہے۔

خدیجہ چنگیز کو امید ہے کہ اس مقدمے میں نئے اور اہم شواہد سامنے آئیں گے اور یہ معلوم ہو گا کہ خاشقجی کے ساتھ کیا کیا گیا۔

جس دن سعودی سفارت خانے میں خاشقجی کو قتل کیا گیا وہ سفارت خانے کے باہر ان کا انتظار کر رہی تھیں۔

جمال خاشقجی کی ترک منگیتر خدیجہ چنگیز نے عدالت میں امید ظاہر کی ہے مقدمہ چلنے سے پتہ چلے گا کہ جمال خاشقجی کی لاش کہاں ہے۔

ترک منگیتر نے اپنے بیان میں کہا کہ مقدمے کی سماعت سے قتل اس کے محرکات کا پتہ چلے گا، جمال کے قاتلوں کو کیفرِ کردار تک پہنچانے کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کو سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان کے حکم پر استنبول میں سعودی قونصل خانہ میں قتل کردیا گیا تھا اور سعودی عرب نے اب تک اس کی لاش کو بھی اس کے لواحقین کے حوالے نہیں کیا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close