پاکستان

این اے 89 جھنگ میں الیکشن ٹریبونل کا احمد لدھیانوی کو کامیاب قرار دینے کا فیصلہ کالعدم

 سپریم کورٹ نے این اے 89 جھنگ میں الیکشن ٹریبونل کا احمد لدھیانوی کو کامیاب قرار دینے کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا۔ مسلم لیگ نون کے شیخ محمد اکرم کی قومی اسمبلی کی رکنیت بحال کر دی گئی۔ جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ فیصلہ جسٹس قاضی فائز عیسٰی نے پڑھ کر سنایا۔ فیصل آباد کے الیکشن ٹریبونل نے 9 اپریل 2014ء کو مولانا احمد لدھیانوی کی درخواست پر 2013ء کے عام انتخابات میں مسلم لیگ نون کے رکن قومی اسمبلی شیخ محمد اکرم کو نااہل قرار دیا تھا۔ شیخ محمد اکرم نے 74324 ووٹ لیکر کامیابی حاصل کی تھی۔ مولانا محمد احمد لدھیانوی نے 71598 ووٹ حاصل کئے تھے۔ الیکشن کمیشن نے 18 اپریل 2014ء کو دوسرے نمبر پر آنے والے امیدوار مولانا احمد لدھانوی کی بطور رکن قومی اسمبلی کامیابی کا نوٹیفکیشن جاری کیا۔ مسلم لیگ ن کے شیخ اکرم نے الیکشن ٹریبونل کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی۔ 22 اپریل 2014ء کو سپریم کورٹ نے الیکشن ٹریبونل کے احمد لدھیانوی کی کامیابی کے فیصلے کو معطل کیا تھا۔ 8 دسمبر 2015ء کو عدالت نے این ایے 89 میں ٹریبونل کے فیصلے کے خلاف اپیل پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔ مسلم لیگ نون کے شیخ محمد اکرم پر کاغذات نامزدگی میں ولدیت اور شناختی کارڈ کے غلط اندراج کا الزام تھا۔ شیخ اکرم پر ایف آئی آر کا اندراج اور انتخابی بے ضابطگی کا الزام بھی عائد کیا گیا تھا۔ شیخ محمد اکرم کے وکیل نے عدالت میں مؤقف اختیار کیا کہ ولدیت اور شناختی کارڈ کی غلطی درست کرا لی گئی تھی۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close