اہم ترین خبریںپاکستان

شیعہ گمشدہ افراد کی رہائی کیسے ہو ، خانپور کے بیدار مومنین نے بتادیا

بالآخر صبح 4 بجے ڈی پی او نے اسی باقر حسین کو بازیاب کروا لیا جس کے بارے میں وہ چند گھنٹے پہلے تک کچھ نہیں جانتے تھے

شیعت نیوز: گزشتہ روز شام 4 بجے ایلیٹ فورس کی گاڑی میں 6,7 باوردی اہلکاروں نے شہر خانپور ضلع رحیم یار خان سے ڈی ایس پی کی رہائش گاہ کے بالکل سامنے سے ایک شیعہ نوجوان باقر حسین کو موٹر سائکل رکوا کر اس کے چھوٹے بھائی کے سامنے مبینہ اغواء کر لیا۔

2012 میں چہلم امام حسین کے موقع پر خانپور میں بم دھماکہ ہوا تھاجس میں درجنوں افراد شہید ہوئے تھےاغواءہونےوالا شیعہ نوجوان باقر حسین اس سانحہ کے کیس کے مدعی امداد حسین کا بیٹا ہے۔

شہر کے ایس ایچ او, ڈی ایس پی اور ڈی پی او نے معذوری کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں کچھ معلوم نہیں. شہر کے مومنین نے 1 گھنٹے بعد ہی سٹی تھانے کے سامنے احتجاج شروع کر دیا. انتظامیہ نے کئی وعدے کئے کہ ہم 1دن میں یا 2 دن میں بازیاب کروا دیں گے۔

یہ بھی پڑھیں: شیعہ مسنگ پرسنز کا مقدمہ

آپ ابھی دھرنا ختم کریں حتٰی چند شیعہ عمائدین بھی انتظامیہ کے ان جھوٹے وعدوں اور باتوں پر بھروسہ کر بیٹھے لیکن خانپور کے شیعوں نے استقامت دکھائی اور باقر حسین کی بازیابی تک گھروں کو واپس جانے سے انکار کر دیا۔

بالآخر صبح 4 بجے ڈی پی او نے اسی باقر حسین کو بازیاب کروا لیا جس کے بارے میں وہ چند گھنٹے پہلے تک کچھ نہیں جانتے تھے. ملک بھر کے تمام مومنین سے گزارش ہے کہ اپنے جوانوں کو اداروں میں موجود ملک دشمن درندوں کے ہاتھوں پامال ہونے سے بچائیں اور فوری میدان میں آئیں اپنے اسیروں کو بازیاب کروائیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close