دنیا

خطے میں امریکی فوجی نقل و حرکت پر چین کا واشنگٹن کو سخت انتباہ

شیعت نیوز: چین کی وزارت خارجہ نے خطے میں فوجی نقل و حرکت کی بابت واشنگٹن کو سخت خبر دار کیا ہے۔

خطے میں امریکہ کی فوجی نقل و حرکت پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے چین کی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ بیجنگ خطے کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے۔

چین کی وزارت خارجہ کے مطابق امریکہ بحر ہند اور بحرالکاہل کے علاقے میں جدید ترین میزائل نصب کرنے کی کوشش کر رہا ہے جسے چین ہرگز برداشت نہیں کرتا۔

چینی فوج کے ترجمان نے بھی امریکہ کو خبر دار کرتے ہوئے کہاہے کہ ان کا ملک ایشیا اور بحرالکاہل کے علاقے میں جدید ترین امریکی میزائلوں کی تنصیب کے معاملے کو نظر انداز نہیں کرسکتا۔ امریکی وزارت جنگ پینٹاگون ایک منصوبے کے تحت خطے میں موجود اپنے میرین فوجیوں کی مدد کے لیے جدید ترین مزائلوں سے لیس بحری جہاز روانہ کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : خطے میں بدامنی کی اماراتی سازش بے نقاب، ترکی کی یو اے ای کو دھمکی

دوسری جانب چین کے صدر شی جن پنگ کو پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس کے معاملے پر چین اور امریکہ کے درمیان جنگ ہوسکتی ہے۔

چینی صدر کو بتایا گیا ہے کہ وبا کے پیش نظر چین کو بڑھتی ہوئی دشمنی کا سامنا ہے اور امریکہ کے ساتھ تعلقات مسلح محاذ آرائی میں تبدیل ہو سکتے ہیں۔ رپورٹ گزشتہ ماہ صدر شی جن پنگ اور دیگر اعلی افسران کو پیش کی گئی تھی جس کے مطابق 1989ء میں تیانمن اسکوائر میں جمہوریت پسندوں کے خلاف کارروائی کے بعد سے یہ دوسرا موقع ہے کہ عالمی سطح پر چین مخالف جذبات عروج پر ہیں۔ رپورٹ کی تفصیل سے واقف لوگوں نے معاملے کی سنگینی کے پیش نظر اپنی شناخت ظاہر نہیں کی۔

رپورٹ تھنک ٹینک اور عالمی تعلقات سے متعلق چینی ادارے سی آئی جی آئی آر نے تیار کی ہے۔

خیال رہے کورونا وائرس کے متعلق امریکہ اور چین کی جانب سے تلخ بیانات کا تبادلہ کافی عرصے سے جاری ہے جب کہ امریکہ نے چین پر یہ الزام بھی عائد کیا ہے کہ اس نے ووہان کی لیبارٹری میں وائرس تیار کیا۔ کووڈ 19 کے آنے کے بعد جب دونوں ملکوں کے درمیان فضا مزید کشیدہ ہوئی ہے اور ایک موقع پر ٹرمپ اسے ’چینی وائرس‘ کا نام بھی دے چکے ہیں۔

 

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close