کاپی رائٹ کی وجہ سے آپ یہ مواد کاپی نہیں کر سکتے۔
پاکستان

سعودیہ عرب میں شاہی حکومت کے ہاتھوں 37بے گناہ شیعہ مسلمانوں کا بہیمانہ قتل اور پاکستانی میڈیا کی فضلہ خوری

شیعیت نیوز: میڈیاریاست کا چوتھا ستون جس کی بنیاد جھوٹ پر منحصر ہے جس کے گلے میں امریکا و برطانیہ و سعودیہ کی غلامی کا طوق اور جیبوں میں ڈالر و ریال ہیں اسی لیے ان میڈیا اداروں کا دوہرا معیار ہے، اگر آزادی کی تحریک یمنی چلائیں تو باغی، سعودی چلائیں تو دہشت گرد، بحرینی چلائیں تو غدار اور ان ممالک کی حکومتیں پاکباز لیکن شام و عراق و لبنان میں دہشتگرد شدت پسندانہ کارروائیاں کریں اور وہاں کئ حکومتیں کا قلعہ قما کرے تو حکومت ظالم و جابر ہوجاتی ہے۔

خیر پاکستان کے فضلا خور میڈیا کی بات کرتے ہیں جو دورہ بن سلمان کے بعد سے بالخصوص اور دورہ بن سلمان سے قبل بالعموم بھرپور انداز میں ریال حلال کرنے پر ت٘لا ہے، پاکستانی میڈیا ادارے سعودی عرب میں مقیم بالخصوص صوبہ قطیف "جہاں دنیا کا سب سے بڑا تیل کا کنواں ہے” کی عوام (شیعہ) کئی عشروں سے اپنے حقوق اور بادشاہت سے آزادی کیلئے جدوجہد کررہے ہیں اور آل سعود نسل یہود کی جارح فورسز آئے روز قطیف میں مسلح کارروائیاں کرکے بے گناہ شیعہ خوانوں کو شہید و اسیر کرتی ہیں اور پاکستانی میڈیا انہیں دہشت گرد گردانتا ہے۔

2015 میں شیخ باقر النمر کو شہید کیا گیا اور ایک روز قبل متعدد علماء اور 15 سالہ بچے سمیت 37 بے گناہ شیعہ افراد کو بے دردی نے سر قلم کرکے شہید کردیا جاتا ہےاور پاکستانی میڈیا سعودیہ کا فضلاء اپنے منہ میں بھرتے ہوئے ان بے گناہ شیعہ افراد و علماء کو دہشت گرد لکھتا ہے۔میڈیا اداروں پر قرآن مجید کی سورہ بقرہ کی آیت نمبر 2 بلکل صدق آتی ہے بیشک اللہ کے نزدیک جانداروں میں سب سے بدتر وہی بہرے، گونگے ہیں جو (نہ حق سنتے ہیں، نہ حق کہتے ہیں اور حق کو حق) سمجھتے بھی نہیں ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close