اہم ترین خبریںپاکستان

سعودیہ عرب میں ملازمت پیشہ 38پاکستانی شیعہ جوان ، سعودی انٹیلی جنس اداروں کےہاتھوں اغوا

ذرائع نے مزید بتا یا ہے کہ ان تمام جوانوں کےسفری ریکارڈ کے مطابق یہ 2014 سے سعودی عرب میں مقیم ہیں اور اس دوران انہوں نے نا ہی کبھی شام کا دورہ کیا نا ہی کبھی کسی اور ملک گئے ہیں

شیعت نیوز: سعودیہ عرب میں ملازمت پیشہ 38  پاکستانی شیعہ جوان ولی عہد محمد بن سلمان کی ایماء پر سعودی انٹیلی جنس اداروں کے ہاتھوں اغواکرلیئے گئے ہیں، اہل خانہ تاحال پریشان، پاکستانی سفارت خانہ تاحال خاموش ۔ ذرائع کے مطابق تمام اغواءشدہ پاکستانیوں کا تعلق پاراچنار سے ہے جنہیں امریکی ، اسرائیلی وسعودی نوازعالمی دہشت گردگروہ داعش کے خلاف شام میں برسرپیکار لشکر زینبیون سے تعلق کے شبہ میں لاپتہ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ایران میں کورونا سے ایک لاکھ پچیس ہزار سے زائد افراد صحت یاب ہوگئے ہیں۔ جہانپور

تفصیلات کے سعودی عرب کی مختلف فیکٹریزمیں ملازم پاراچنار سے تعلق رکھنے والے 38 شیعہ جوانوں کو سعودی انٹیلی جنس اداروں نے گزشتہ ماہ اغواء کرلیا تھا۔ ذرائع کے مطابق 18مارچ کو ان جوانوں کو اس وقت جبری گمشدہ کیا گیا جب یہ اپنی ڈیوٹی مکمل کرکے اپنی اپنی قیام گاہوں میں آرام میں مصروف تھے ۔

یہ بھی پڑھیں: امام خمینی کی برسی اور موجودہ امریکی حالات پر آیت اللہ خامنہ ای کےخطاب کی پاکستانی میڈیامیں خصوصی عکاسی

ذرائع نے مزید بتا یا ہے کہ ان تمام جوانوں کےسفری ریکارڈ کے مطابق یہ 2014 سے سعودی عرب میں مقیم ہیں اور اس دوران انہوں نے نا ہی کبھی شام کا دورہ کیا نا ہی کبھی کسی اور ملک گئے ہیں۔ سعودی خفیہ اداروں کا ان جوانوں پر شام میں لڑنے والےلشکر زینبیوں سے تعلق کا شبہ سراسرمن گھڑت اور جھوٹ پر مبنی ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: سابق امریکی وزیر دفاع جنرل جیمز میٹس کاامریکی صدر ٹرمپ کے متعلق اہم انکشاف سامنے آگیا

واضح رہے کہ شام اور عراق کی آئینی حکومتوں کے خاتمے اور وہاں امریکی اسرائیلی ایماءپر پٹھوں حکومتوں کے قیام کے لئے آل سعود حکومت نے دنیا بھر سے تکفیری وہابی دہشت گردوں کو جمع کرکے عالمی دہشت گرد تنظیم داعش کی تشکیل میں معاونت کی جنہیں دنیا بھر کے انقلابی ومقاومتی گروہوں نے شکست فاش سے دوچار کیا ہے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close