اہم ترین خبریںپاکستان

سانحہ مدینتہ العلم، سندھ ہائیکورٹ کاسپاہ صحابہ کے مجرم تحسین نیاز کی سزائے موت برقرار رکھنے کا حکم

فائرنگ کرتے ہُوئے فرار ہونے والے سزائے موت کے مجرم تحسین نیاز کو موقع پر زخمی حالت میں گرفتار کیا گیا تھا

شیعت نیوز: سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ مسجد وامام بارگاہ مدینتہ العلم بم دھماکے کے مرکزی مجرم کالعدم سپاہ صحابہ کے دہشت گرد تحسین نیاز سزائے موت کو برقرار رکھنے کا فیصلہ جاری کردیا۔

یہ بھی پڑھیں: سربراہ ایم ڈبلیوایم علامہ راجہ ناصرعباس کی پی آئی سی لاہور پر حملے کی مذمت، قانونی کاروائی کامطالبہ

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ نے سانحہ مسجد وامام بارگاہ مدینتہ العلم کراچی کے مرکزی مجرم ملک دشمن کالعدم وہابی دیوبندی دہشت گرد جماعت کے تحسین نیاز کی بریت کی درخواست مسترد کرتے ہوئے اس کی سزائے موت برقراررکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: صیہونیت کی طرح مودی کی ہندوتوا اپنی انتہاکو پہنچ چکی ہے، علامہ سید ساجد علی نقوی

ذرائع کے مطابق سانحہ مسجد وامام بارگاہ مدینتہ العلم بم دھماکہ کیس کی سماعت سندھ ہائی کورٹ میں ہوئی جس میں مجرم کے وکیل وقت نے سزائے موت معاف کرکے بریت کی درخواست داخل کروائی جس پر جعفریہ لیگل ایڈ کمیٹی کے سربراہ سید تصور حسین رضوی ایڈوکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے معزز عدالت سے ملزم کی سزائے موت برقرار رکھنے کا اپیل کی تھی ۔

یہ بھی پڑھیں: انسانی حقوق کے عالمی دن کے موقع پر شیعہ مسنگ پرسنز کے اہل خانہ کی احتجاجی پریس کانفرنس

واضح رہے کہ سانحہ مسجد وامام بارگاہ مدینتہ العلم کراچی 30مئی 2005کونماز مغربین کے دوران رونما ہوا تھا جس میں پولیس اہلکار راجہ سمیت مسجد کے مؤذن فدا حُسین اور ملازم محمد علی شہید جبکہ 30 کے قریب مومنین زخمی ہُوئے تھے ۔ فائرنگ کرتے ہُوئے فرار ہونے والے سزائے موت کے مجرم تحسین نیاز کو موقع پر زخمی حالت میں گرفتار کیا گیا تھا۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close