پاکستان

مشال خان کے قتل کا ماسٹر مائنڈ عارف سپاہ صحابہ کا سابقہ کارکن ہے، انکشاف

شیعیت نیوز: خیبر پختونخواہ کے لوکل میڈیا کے مطابق مردان یونیورسٹی میں مشال خان پر توہین رسالت کا الزام لگا کر قتل کرنے والے ہجوم کو مشتعل کرنے والا پی ٹی آئی کا کونسلر عارف تکفیری کالعدم جماعت سپاہ صحابہ کا سابقہ رکن ہے، اس بات کا انکشاف کے پی کے سے تعلق رکھنے والے نیوز رپورٹر نے سماجی رابطہ کی ویب سائٹ پر اپنے پیغام میں بھی کیا۔

عارف نامی شخص جو مشال خان کو قتل کرنے کے بعد مشتعل ہجوم سے پولیس کو نام نا بتانے کا عہد لے رہا ہے ابھی پولیس کی حراست میں ہے۔

گذشتہ روز ایک ویڈیو بھی سامنے آئی تھی جس میں کالعدم سپاہ صحابہ کے سابق رکن آصف کو صاف دیکھا جاسکتا ہے کہ مشال خان کو قتل کرنے کے بعد وہ جشن منارہے ہیں اور پولیس کو نام نا بتانے کا عہد بھی لے رہے ہیں۔

واضح رہے کہ ملک خدادا پاکستان میں ہر شدت پسندی کے پیچھےایک ہی جماعت سے منسلک افراد کا نام سامنے آتا ہے اور وہ ہے کالعدم سپاہ صحابہ۔

سیکورٹی ماہریں کا کہنا ہے کہ کالعدم سپاہ صحابہ نے اپنے کافی نظریاتی کارکناں کو دیگر جماعتوں میں بھیجا ہے جس میں پاکستان تحریک انصاف اور ایم کیو ایم سرفہرست ہیں، جبکہ مسلم لیگ ن تکفیری دہشتگر د کا جماعت کا سیاسی ونگ سمجھا جاتا ہے۔

 

 

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close