اہم ترین خبریںپاکستان

محرم الحرام میں کورونا وائرس پھیلنے کا ڈرامہ رچایاجائےگا،زید حامد کا انکشاف

میں پاکستان کے مستقبل کے بارے میں انتہائی فکرمند ہو جاتا ہوں۔۔ اس قدر خطرناک حد تک جاھل کوئی کیسے ہو سکتا ہے؟ ایک بھی سنجیدہ فرد نظر نہیں آتا۔

شیعیت نیوز: نامور تجزیہ کار زین زمان حامد انکشاف کیا ہے کہ ایک مرتبہ پھر سے محرم الحرام میں کورونا وائرس پھیلنے کا ڈرامہ رچایاجائےگا۔

انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹرپر جاری اپنے تازہ پیغام میں کہاہے کہ میں ایک دفعہ پھر خطرے سے آگاہ کر رہا ہوں۔۔ یہ دس محرم کے بعد دوسری لہر کا ڈرامہ شروع کرنے جا رہے ہیں۔۔۔ پھر وہی لاک ڈاؤن، وہی چہرے پر کتا ماسک، وہیں سماجی فاصلے، وہی مساجد کی بندش، وہی اسکولوں پر تالے اور وہی جعلی پی سی آر ٹیسٹ۔۔ اور وہی میڈیا پر ابلاغی دہشت گردی۔۔۔تیار رہو

یہ بھی پڑھیں: متحدہ عرب امارات نے اسرائیل کو تسلیم کرکے امت مسلم کی پیٹھ میں چھرا گھونپا ہے، حافظ حسین احمد

انہوں نے اپنے پیغام میں مزید کہاکہ جب میں ان بے شرموں کو سنتا ہوں کہ یہ اپنے "سمارٹ لاک ڈاؤن” کو کامیابی کی دلیل قرار دیتے ہیں اور کم اموات کا سہرا خود لیتے ہیں، تو میں پاکستان کے مستقبل کے بارے میں انتہائی فکرمند ہو جاتا ہوں۔۔ اس قدر خطرناک حد تک جاھل کوئی کیسے ہو سکتا ہے؟ ایک بھی سنجیدہ فرد نظر نہیں آتا۔

زید حامد نے اپنے تازہ ٹوئٹس میں اس خدشے کا واضح اظہار کیاہے کہ محرم الحرام کے بعد دوبارہ شیعہ مکتب فکر کے خلاف ایک ابلاغی محاذکھولاجائے گااور پاکستان میں کورونا کیسز میں اضافے کا سارا ملبہ شیعیان حیدرکرارؑ پر ڈالنے کی کوشش کی جائے گی ۔

یہ بھی پڑھیں: علماءوخطباءمحرم الحرام میں واقعہ کربلا کے تناظر میں کشمیریوں پر ہونے والے ظلم وجبر کو دنیا تک پہنچائیں،پیر نورالحق قادری

واضح رہے کہ 6ماہ قبل جب کورونا وائرس نے دنیا بھرکی طرح پاکستان میں سر اٹھایا اور پوری قوم کو اپنی لپیٹ میں لیا تھا اس وقت بھی سعودی نواز میڈیا، صحافیوں اور بعض سیاسی شخصیات اور کالعدم تکفیری دہشت گرد جماعتوں نے اس وائرس کے پھیلاؤکا ساراکا سارا الزام ایران اور عراق سے وطن واپس آنے والے زائرین پر ڈال کر ایک فرقہ وارانہ مہم کا آغاز کردیا تھا۔

جبکہ عید الفطر ، عید الاضحیٰ اور ابی چند روز قبل جشن آزادی کے موقع پر پوری قوم کی جانب سے کی جانے والی لاپرواہی اور طبی ماہرین کی احتیاطی تدابیر کی کھلی خلاف ورزیوں کے خلاف آواز اٹھانے والا اور اس کے نقصانات پر بات کرنے والا کوئی دکھائی نہیں دیتا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close