اہم ترین خبریںپاکستان کی اہم خبریں

کشمیر کا مسئلہ کیوں حل نہیں ہوسکا، مفتی گلزار نعیمی نے وجہ بتادی

شیعت نیوز: جماعت اہل حرم کے سربراہ مفتی گلزار نعیمی نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کہ سابقہ حکومتوں نے کشمیریوں کے ساتھ بہت بڑا ظلم کیا۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر کمیٹی یعنی جو کشمیر کے مسئلے کو دیکھتی ہے، وہ ایسے شخص کے حوالے کر دی، جو بنیادی اور نظریاتی طور پر قیام پاکستان کے حق میں نہیں تھا

اورجس کے بھارت کے ساتھ درینہ تعلقات تھے اور ہیں۔

مفتی گلزار نعیمی نے کہا کہ دارالعلوم دیوبند میں پاکستان کے پرچم نذر آتش کیا گیا اور پاکستان مخالف مظاہرے کیے گئے۔

مفتی گلزار نعیمی نے سوال کیا کہ کیا انہوں نے کبھی کشمیریوں کے حق میں کوئی کمپیئن نہیں چلائی۔

مولانا فضل الرحمان پیپلزپارٹی اور نون لیگ کے دور میں دس سال تک کشمیر کمیٹی کے چیئرمین رہے،

کشمیر پر کوئی ایک اجلاس تک نہ بلایا، اس حوالے سے کوئی بات تک نہ کی۔

مفتی گلزار نعیمی نے مزید کہا کہ آج اس مسئلے پر سفارتی سرگرمیوں میں گرمی محسوس ہوتی ہے،

بہت سارے ممالک کو اپروچ کیا گیا ہے، اپنی بات اور موقف پہنچایا گیا ہے۔

آپ جے یو آئی کی پوری تاریخ اٹھا کر دیکھ لیں کہ مسئلہ کشمیر کیلئے انہوں نے کوئی اسٹیند لیا ہو،

اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ یہ لوگ بھارت کے ساتھ تعلقات خراب نہیں کرنا چاہتے۔

انہوں نے کہا کہ مولانا ٖفضل الرحمان کو مذہبی یا امہ کے رہنما کے طور پر نہ دیکھا جائے،

بلکہ انہیں ایک سیاسی رہنما کے طور پر دیکھیں۔

ختم نبوت کا معاملہ ہوا، آئین سے 295 سی کو ختم کرانے کی کوشش کی گئی،

مگر مولانا خاموش رہے۔ لیکن موجودہ حکومت پر فتوے لگا رہے ہیں، یہودی اور یہودیوں کے ایجنٹ کہہ رہے ہیں۔

میں یہ سمجھتا ہوں کہ عمران خان صاحب نواز شریف اور آصف زرداری سے کئی گنا اچھے اور بہتر کام کر رہے ہیں۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close