مقبوضہ فلسطین

مقبوضہ بیت المقدس میں چاقو حملے میں یہودی آباد کار واصل جہنم

شیعت نیوز : مقبوضہ بیت المقدس میں ’’ھار حوما‘‘ یہودی کالونی میں چاقو حملے میں زخمی ہونے والا ایک یہودی آباد کار ہلاک ہوگیا۔

یہ واقعہ جنوب مشرقی بیت المقدس میں پیش آیا تاہم اس چاقو حملے کی وجوہات کے بارے میں کوئی علم نہیں ہوسکا۔

یہ بھی پڑھیں : فلسطینیوں کے حق واپسی مارچ پر حملہ، 5 فلسطینی زخمی

اسرائیل کے عبرانی ذرائع ابلاغ کے مطابق اسرائیلی پولیس نے ایک مشتبہ حملہ آور کو حراست میں لیا ہے جس سےاس واقعے میں پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔

عبرانی ٹی وی چینل 12 کے مطابق اسرائیلی پولیس نے یہودی آباد کار کی ہلاکت کو فوج داری کیس قرار دیتے ہوئے ایک مقامی فلسطینی کو حراست میں لیا ہے جس پر یہودی آباد کار کی ہلاکت کی ذمہ داری عائد کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیں : غرب اردن میں صیہونی فوج کی گھر گھر تلاشی، 17 فلسطینی گرفتار

دوسری طرف اسرائیل کے ایک کثیرالاشاعت عبرانی اخبار ’’یسرائیل ھیوم‘‘ نے اپنی ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ سال 2019ء کے دوران فلسطینی مزاحمت کاروں کے حملوں میں یہودی آباد کاروں کی ہلاکتوں کے واقعات میں کم آئی ہے۔ رواں سال کے دوران فلسطینیوں کی مزاحمتی کارروائیوں کے نتیجے میں پانچ غاصب صیہونی جہنم واصل ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں : اسرائیلی مظالم پر عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ

اخباری رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سال 2018ء کے دوران فلسطینیوں کی مزاحمتی کارروائیوں میں 13 صیہونی ہلاک ہوئےتھے۔

رپورٹ کے مطابق فلسطینیوں کی مزاحمتی کارروائیوں کے واقعات میں کمی دیکھی گئی۔ تاہم اسرائیلی اخبار کے مطابق حملوں کی تعداد میں کمی کا یہ مطلب ہرگز نہیں کہ غرب اردن میں حماس اور عوامی مزاحمتی تنظیموں کی قوت یا ان کی مزاحمتی صلاحیت میں کوئی کمی آئی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close