اہم ترین خبریںپاکستان

لال مسجد کے برقعہ پوش مفرورمولوی کی یزید لعین کی حمایت کےبعدقائد اعظم کےخلاف بکواس

محمد علی جناح کو قائد اعظم نہیں کہنا چاہئے، ہمارے قائد اعظم محمد علی جناح نہیں نبی کریم ؐ ہیں۔

شیعیت نیوز: بلی تھیلے سے باہر آگئی ،لال مسجد کے برقعہ پوش مفروردیوبندی ملا عبد العزیز کی نواسہ رسول ؐ امام حسین ؑ اور اہل بیت اطہار کےقاتل یزید لعین کی حمایت کےبعدبانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح ؒؒکے خلاف بکواس ، کل دیوبند مسلک کے بزرگوں نے قیام پاکستان کی مخالفت کی آج ان کی اولادیں قائد اعظم کے خلاف بھونکنے لگیں، افسوس ریاست پاکستان اس ملک دشمن تکفیری ملا کےخلاف کسی بھی قسم کا اقدام کرنے گریزاں ۔

تفصیلات کےمطابق آج جب پورے ملک میں بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح ؒ کا 73واں یوم وفا ت عقیدت واحترام کے ساتھ منایا جارہا تھا تو عین اسی دن پاکستان کے درالحکومت اسلام آباد میں ایوان اقتدار سے چند قدم کے فاصلے پر موجود مسجد ضرار (لال مسجد )میں بیٹھا ایک بدبخت خطیب ملا عبد العزیزجوکہ نواسہ رسول ؐامام حسینؑ اور ان باوفااصحاب وانصار کےقاتل یزید ابن معاویہ ملعون کو اپنا ہیرواور رحمتہ اللہ علیہ قرار دیتا ہے بکواس کررہا تھاکہ محمد علی جناح کو قائد اعظم نہیں کہنا چاہئے، ہمارے قائد اعظم محمد علی جناح نہیں نبی کریم ؐ ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: شہر قائدمیں کافرکافرشیعہ کافر کے نعرے اوروال چاکنگ،امام بارگاہ پرحملہ،عظمت صحابہ مارچ کےتکفیری منتظمین وشرکاء کیخلاف کاروائی کا مطالبہ

یزید ملعون کے اس روحانی فرزند ملا عبد العزیز نے کہا کہ محمد علی جناح کے بارے میں یہ کہنا کہ انہوں نے پاکستان کے قیام کیلئے بڑی قربانیاں دیں یہ بھی مکروفریب ہے،پاکستان بنانے کیلئے قربانیاں علماءنے دی، محمد علی جناح نے کون سے قربانی دی ؟ یہ سارا انگریز کا پلان تھا ، محمد علی جناح کتنی مرتبہ جیل گئےپاکستان بنانے کیلئے؟ان کے خاندان کا کون سا فرد شہید ہوا؟

ملا عبد العزیز نے اپنی بکواس میں کہا کہ انگریز نے برصغیر سے جاتے ہوئے اس خطے کو تقسیم کرنے کا فیصلہ کرلیا تھا اسی لیئے دو جماعتیں کانگریس اور مسلم لیگ بنوائیں ۔آج تک مسلم لیگ وہی گل کھلا رہی ہے، مسلم لیگ نے پاکستان بنایا تھا نا اربوں کھربوں روپے یہ مسلم لیگ ڈکار گئی۔جب آئے لوٹا،انگریز پہلے ہندستان میں اورپھر پاکستان میں انہیں ہم پر مسلط کرکے چلے گئے ۔ ہمارے قائد اعظم محمدعربی ؐہیں اور کوئی قائد اعظم نہیں ہے ۔

یہ بھی پڑھیں: تسلسل کے ساتھ جنسی زیادتی کے ہولناک واقعات کا رونما ہونا قانون نافذ کرنے والے اداروں کی غفلت کا نتیجہ ہے،زھرا نقوی

ملا عبد العزیز نے مزید بکواس کرتے ہوئے کہا کہ انگریز نے جاتے جاتے تقسیم کا منصوبہ کامیاب کرنے کیلئے ادھر ایک ہندو کو قائد بنوادیا اور ہم نے یہاں اور کو اپنا قائد اعظم بنا لیا یہ انگریز کی سازش تھی اور کچھ نہیں ۔واضح رہے کہ ریاست کی ناک کے نیچے یہ ملعون ابن ملعون کبھی وطن عزیز کے خلاف ، کبھی پاک فوج کے خلاف، کبھی امام حسینؑ کے خلاف اور کبھی قائد اعظم محمد علی جناح ؒ کےخلاف اپنے اندر کا زہر نکالتا ہے لیکن ہمارے مقتدر ادارے پتہ نہیں کن نامعلوم وجوہات کی بناءپر اسکے خلاف کوئی اقدام کیوں نہیں اٹھاتے؟

ایسی کیا مجبوری ہے ریاستی اداروں کی جو اس ملک دشمن ملا کے خلاف کوئی سخت ایکشن لینے سے گھبراتے ہیں ، یہ بدبخت بد نسل انسان صبح وشام ریاست کی رٹ کو چیلنج کرتا ہے لیکن ہمارے قانون نافذکرنے والے اداروں کو اس کی کوئی قانون شکنی دکھائی نہیں دیتی ۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close