اہم ترین خبریںپاکستان

احتجاج ہمیشہ قانون و آئین کے دائرہ اختیار میں رہتے ہوئے کیا جاتا ہے، علامہ باقرزیدی

انہوں کے کہا اس افسوسناک واقعہ اور اس کے محرکات کی جانچ پڑتال کے لیے ایک اعلی سطح کمیٹی تشکیل دی جانی چاہیے اور ذمہ داران کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی ہونی چاہیے۔

شیعت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ باقر عباس زیدی نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ہنگامہ آرائی کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسی بھی زیادتی کے خلاف آواز بلند کرنا ہر کسی کا آئینی حق ہے لیکن احتجاج کی آڑ میں ہنگامہ آرائی کی اجازت کسی کو نہیں دی جا سکتی۔احتجاج ہمیشہ قانون و آئین کے دائرہ اختیار میں رہتے ہوئے کیا جاتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: لکی مروت میں تکفیری دہشتگردوں کی فائرنگ سے صدارتی ایوارڈ یافتہ شاعر ظہور عباس شہید

انہوں نے پی آئی سی میں سنگین نوعیت کے مریض لائے جاتے ہیں وہاں مریضوں اور لواحقین کے لیے مشکلات پیدا کرنا کسی بڑے حادثے کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی مہذب معاشرے میں عام شہری قانون کو کبھی بھی اپنے ہاتھ میں نہیں لیتے۔وکلا کا تعلق ایک پڑھے لکھے طبقے سے ہے۔ پڑھے لکھے لوگوں سے اس طرح تور پھوڑ کی توقع نہیں کی جا سکتی۔

یہ بھی پڑھیں: علامہ غلام حر شبیری کا وفد کے ہمراہ پارا چنار اور ہنگو کا دورہ، علماء و عمائدین سے ملاقات

انہوں نے کہا کہ بعض اوقات کسی بھی طبقے کے چند افراد کا غیر ذمہ دارانہ عمل پورے طبقے کی نیک نامی کے لیے خطرہ بن جاتا ہے۔حالات خواہ کیسے بھی ہوں عقل و بصیرت کے دامن کو ہاتھ سے چھوڑنا غیر دانشمندانہ فعل سمجھا جاتا ہے۔وکلا برداری کسی بھی ریاست میں قانونی ماہرین تصویر ہوتی ہے انہیں قانونی تقاضوں پر زیادہ سختی سے کاربند ہونا چاہیئے۔

یہ بھی پڑھیں: سربراہ ایم ڈبلیوایم علامہ راجہ ناصرعباس کی پی آئی سی لاہور پر حملے کی مذمت، قانونی کاروائی کامطالبہ

انہوں کے کہا اس افسوسناک واقعہ اور اس کے محرکات کی جانچ پڑتال کے لیے ایک اعلی سطح کمیٹی تشکیل دی جانی چاہیے اور ذمہ داران کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی ہونی چاہیے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close