اہم ترین خبریںپاکستان

کافرکافرکے جواب میں بھائی بھائی کے موثربیانیے کی ترویج ہونی چاہیے،وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نورالحق قادری

فرانس کے واقعہ پرپوری دنیا میںسے صرف تین اسلامی ممالک ترکی،ایران اورپاکستان نے آواز بلند کی ہے۔انہوں نے کہا کہ وحدت و اخوت کے لیے منعقدہ یہ کانفرنس ایک بہترین پیغام ہے۔

شیعیت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام رحمت اللعالمینؐ وحدت کانفرنس کا انعقاد اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں ہواجس میں ایم ڈبلیو ایم،ملی یکجہتی کونسل،جماعت اسلامی،شیعہ علما کونسل ، پاکستان عوامی تحریک، سنی اتحادکونسل، جمعیت علمائے پاکستان اور مختلف مذہبی جماعتوں کے رہنمائوںسمیت کثیرتعداد میں مختلف مکاتب فکر اور شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی شخصیات نے شرکت کی۔

وفاقی وزیر برائے مذہبی امور پیر نور الحق قادری نے کانفرنس سےبحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہاکہ علامہ راجہ ناصرعباس نے ہمیشہ اتحاد امت وتقریب امت کیلئے کوششیں وکاوشیں کی ہیں اور آج کا یہ اجتماع بھی اسی سلسلے کی کڑی ہے ۔انہوں نے کہاکہ میں اپنی طرف سے اور حکومت پاکستان کی جانب علامہ راجہ ناصرعباس کی وحدت وتقریب امت کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتاہوں۔

یہ بھی پڑھیں: کالعدم سپاہ صحابہ کا سرغنہ احمد لدھیانوی انتخابی مہم پرگلگت پہنچ گیا، علاقائی امن وامان کو خطرہ، ریاستی ادارے خاموش تماشائی

وفاقی وزیرنے کہا کہ متشدد رویوں اورمذہبی منافرت کی فضا کوختم کرنے کے لے ملی یکجہتی کونسل اور علماء کاکردار ہمیشہ جاندار رہا ۔شیعہ سنی اورصوفی و سلفی کے نام پر دنیا میں جو آگ لگائی جارہی ہے اس کے لیے ہمیںپیش بندی کی ضرورت ہے۔شیعہ سنی اختلافات صدیوں سے موجود ہیں جن کوچھیڑنے کی بجائے مشترکات پر یک جا ہونا ہو گا۔مذہبی نفاق کی راہ روکنے کی ذمہ داری ریاست کے ساتھ ساتھ علما ءکی بھی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان کا غیر مستحکم ہونا پورے خطے کیلئے نقصان دہ ہے،وطن عزیز سیاسی بحران کاقطعی متحمل نہیں،علامہ راجہ ناصرعباس

انہوں نے مزید کہاکہ کافرکافرکے جواب میںبھائی بھائی کے موثربیانیے کی ترویج ہونی چاہیے۔اسلامو فوبیا کے حوالے سے عالمی فورمز پروزیر اعظم عمران خان کاموقف امت مسلمہ کی ترجمانی کرتا ہے۔فرانس کے واقعہ پرپوری دنیا میںسے صرف تین اسلامی ممالک ترکی،ایران اورپاکستان نے آواز بلند کی ہے۔انہوں نے کہا کہ وحدت و اخوت کے لیے منعقدہ یہ کانفرنس ایک بہترین پیغام ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close