اہم ترین خبریںپاکستان

سابق وزیراعظم کو جواب دینا ہوگاکہ وہ کن ملک دشمنوں کی خوشنودی حاصل کررہے ہیں ،علامہ راجہ ناصرعباس

آرمینیا و آذربائیجان کا تصادم اور خطے میں اٹھنے والے دیگر بحران عالمی استعماری قوتیں کے پیدا کردہ ہیں جن کا مقصد خطے کی ترقی کے عمل میں رکاوٹ بن کر طاقت کی منتقلی کو روکنا ہے۔

شیعیت نیوز: مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ ارض پاک کو عدم استحکام سے دوچار رکھنے کے لیے آئے روز ایک نیا بحران کھڑا کیا جارہا ہے۔امریکہ اور اس کے حواریوں نے نت نئے پینتروں کے ذریعے پورے خطے کے امن کو داوپر لگا رکھا ہے۔آرمینیا و آذربائیجان کا تصادم اور خطے میں اٹھنے والے دیگر بحران عالمی استعماری قوتیں کے پیدا کردہ ہیں جن کا مقصد خطے کی ترقی کے عمل میں رکاوٹ بن کر طاقت کی منتقلی کو روکنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: کالعدم سپاہ صحابہ کے مولویوں کا وحشیانہ پن عروج پر، اوچشریف میں ایک اور طالب علم پر بہیمانہ تشدد

انہوں نے کہا چائنا پاکستان اقتصادی راہداری کی کامیابی کے لیے پائیدار حکومت کی موجودگی اولین تقاضہ ہے۔موجودہ حالات میں اگر حکومت سے نظریاتی وفکری اختلاف ہوتا تو بھی ہم عالمی سازشوں کو ناکام بنانے کے لیے حکومت کے ساتھ کھڑے دکھائی دیتے تاکہ ملک کو ترقی و استحکام کی راہ پر گامزن کیا جا سکے۔ ملک کے سابق وزیراعظم کےغیر ذمہ دارنہ بیان نےملک میں ایک نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ ملک کےکلیدی عہدے پر برجمان رہنے والے شخص کی طرف سے ریاستی اداروں پر جس سطحی انداز سے تنقید کی گئی اس سے پوری قوم کی دل آزاری ہوئی ہے۔سابق وزیراعظم کو قوم کے سامنے جواب دہ ہونا پڑے گا کہ پاکستانی میزائل کوریورس انجینئرنگ کا نتیجہ قرار دے کر ارض پاک کے کون سے دشمنوں کی خوشنودی حاصل کی جا رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں: سید ناصر حسین کی گمشدگی کے 10سال اور اہل خانہ پر گزری قیامتیں

انہوں نے کہا کہ آئے دن ملک میں کوئی نیا شوشہ چھوڑ کر ہماری قوم کی آنکھوں میں دھول جھونکنا مکار دشمن کی چالیں ہیں تاکہ ہم ان عالمی ایشوز سے بے خبر بیٹھے رہیں جن کا تعلق براہ راست عالم اسلام سے ہے۔عالمی حالات کا تقاضہ ہے کہ پوری قوم بیدار رہ کر دشمن کی چالوں سے آگاہ رہے اور کسی سازش کا حصہ نہ بنے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close