اہم ترین خبریںپاکستان

زائرین کی ایران سے واپسی، سعودی نواز لابی عمران حکومت اور پاک فوج کے خلاف سرگرم

کالعدم سپاہ صحابہ (اہلسنت والجماعت) کے وکیل کی جانب سے ایران،زائرین، حکومت اور پاک فوج کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں پٹیشن داخل، عدالت نے نوٹس جاری کردیئے۔

شیعت نیوز: زائرین کی ایران سے واپسی اور تفتان بارڈر سے صوبائی قرنطینہ سینٹرز میں منتقلی کو لیکر سعودی نواز لابی عمران حکومت اور بعض شیعہ وزراء اور مشیروں کے خلاف مسلسل زہریلے پروپگینڈے میں مصروف ہے اور یہ شور مچا رکھا ہے کہ ایران سے واپس آنے والے زائرین نے پاکستان میں کورونا وائرس پھیلایا ہے۔ اس سعودی نواز لابی  کا خصوصی نشانہ وزیر اعظم کے مشیر ذلفی بخاری، وفاقی وزیر علی زیدی اور پاک فوج ہے ۔ کالعدم سپاہ صحابہ (اہلسنت والجماعت) کے وکیل کی جانب سے ایران،زائرین، حکومت اور پاک فوج کے خلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں پٹیشن داخل، عدالت نے نوٹس جاری کردیئے۔

یہ بھی پڑھیں: علامہ شہنشاہ نقوی نے شیعہ فقہاء کے فتاویٰ اور قائدین کی رضامندی سے انتہائی اہم اور حیران کن اعلان کردیا

کالعدم سپاہ صحابہ لشکر جھنگوی کے وکیل کی جانب سے اسلام آباد ہائیکورٹ میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی تحقیقات کے نام پر ایک متعصبانہ درخواست داخل کی گئی ہے، کالعدم سپاہ صحابہ لشکر جھنگوی کے وکیل حافظ ملک مظہر جاوید ایڈووکیٹ پٹیشنر کی جانب اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیش ہوا،عدالت نے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کی تحقیقات کیلئے جوڈیشل کمیشن کے قیام کی درخواست پر وفاق کو نوٹس جاری کر دیا۔

یہ بھی پڑھیں: زائرین کے خلاف خبر کی اشاعت،خبریں اخبار فوری وضاحتی بیان جاری کرے، علامہ اقتدار نقوی

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار نے استدعا کی کہ تفتان بارڈر سے زائرین کی فیصل آباد، جھنگ یا دوسرے شہروں کو منتقلی کو روکا جائے، اگر زائرین کو ان شہروں میں لانے سے کوئی نقصان ہوا تو ذمہ دار متعلقہ افراد ہوں گے، تفتان بارڈر کو فوری طور پر سیل کرنے کا حکم دیا جائے، بارڈر پر زائرین کے لیے فوری عمارت تعمیر کرکے انہیں وہاں رکھنے کا حکم دیا جائے۔ جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ حکومت سے پوچھ لیتے ہیں کہ تفتان سے آنے والوں کو کہاں رکھا ہے اور یہ مراکز کہاں کہاں قائم کیے ہیں؟ قرنطینہ میں رکھنے کا مقصد ہی انہیں الگ رکھنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ایم ڈبلیوایم کی جانب سے ناصرشیرازی کی سربراہی میں المجلس ڈیزاسٹرمینجمنٹ سیل کے قیام کا اعلان

وکیل درخواست گزار نے کہا کہ عوام کو فوری طور پر ماسک اور سینیٹائزرز مہیا کرنے کا حکم دیا جائے، ایران سے آنے والے زائرین کو گنجان آباد شہروں میں منتقلی سے روکا جائے۔ جسٹس عامر فاروق نے کہا کہ یہ پالیسی معاملہ ہے، شارٹ ڈیٹ دے رہے ہیں، حکومت کا جواب آنے دیں۔

یہ بھی پڑھیں: وزیر اعلیٰ بلوچستان نےبھی زائرین کے بجائے دیگر ممالک سے آنے والوں کو خطرہ قرار دے دیا

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وزیراعظم کے معاون خصوصی ذلفی بخاری اور وزیراعظم کے پرنسپل سیکرٹری ، ڈی جی آئی ایس پی آر ، ڈی جی پی ڈی ایم اےسمیت فریقین کو نوٹس جاری کرکے ایک ہفتے میں جواب طلب کر لیا۔ واضح رہے کہ زائرین کے معاملہ کو لیکر ملک میں ایک مخصوص لابی مسلسل پروپیگنڈا کر رہی ہے، اور بعض حکومتی شخصیات کو بھی فرقہ وارانہ مسائل میں الجھانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close