مقبوضہ فلسطین

انسانی حقوق کی فلسطینی مظاہرین پر طاقت کے استعمال کی مذمت

فلسطین میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے ایک گروپ نے فلسطینی مظاہرین پر اسرائیلی فوج کے قاتلانہ حملوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ اسرائیلی فوج فلسطینیوں کے جسم کے نازک حصوں پرحملے کرکےانہیں شہید کررہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق مرکز برائے انسانی حقوق کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ قابض صیہونی فوج کے ہاتھوں شہید یا شدید زخمی ہونےوالے بیشترفلسطینیوں کے جسم کے نازک حصوں پرگولیاں لگیں۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فوج غزہ کی پٹی میں جاری ہفتہ وار حق واپسی ریلیوں کو کچلنے کے لیے طاقت کا اندھا دھند استعمال کررہی ہے۔

غزہ میں گذشتہ جمعہ کے روز 66 ہفتے ہونےوالے مظاہروں میں اسرائیلی فوجیوں نے فلسطینی مظاہرین پر اندھا دھند شیلنگ کی اور گولیاں چلائیں۔

انسانی حقوق مرکزکا کہنا ہے کہ اسرائیلی فوج کی ریاستی دہشت گردی کےدوران غزہ کی پٹی میں ڈیڑھ سال کے دوران 74 عام شہری جن میں 23 بچے،، دوخواتین، ایک صحافی ، دو امدادی کارکن شہید کیے۔ یہ تمام شہادتیں غزہ میں‌ہونےوالے ہفتہ وار مظاہروں میں ہوئیں۔

خیال رہےکہ 30 مارچ 2018ء سے غزہ میں جاری احتجاجی مظاہروں کےدوران اسرائیلی فوج کے طاقت کے استعمال سے 207 فلسطینی شہید اور 13 ہزار 127 زخمی ہوچکےہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close