مقبوضہ فلسطین

اسرائیلی کارروائیاں، فلسطینی طالبہ اغوا، 60 بچے جیل منتقل

شیعت نیوز:اسرائیلی فوج نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی شہر الخلیل میں ترقومیا کےمقام پر ایک کارروائی کے دوران پولی ٹیکنیک کی طالبہ کو اغواء کرنے کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔

رپورٹ کےمطابق اسرائیلی فوج نے 21 سالہ ریان جمال ابو حلتم کو ترقومیا کے مقام پرچھاپے کے دوران حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پرمنتقل کردیا گیا۔

کلب برائے اسیران کے مطابق گذشتہ روز اسرائیلی فوج نے غرب اردن میں تلاشی کے دوران دو سگے بھائی اور ایک لڑکی سمیت سات فلسطینیوں کو حراست میں لے لیا۔

دوسری طرف اسرائیلی جیلوں میں قید کیےگئے فلسطینیوں کے حقوق کے ذمہ دار سرکاری ادارے کی طرف سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ صیہونی حکام نے 60 فلسطینی بچوں کونہ صرف وکیل کرنے کے آئینی حق سے محروم کردیا ہے بلکہ انہیں عقوبت خانوں میں ڈال دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق حال ہی میں صہیونی حکام نے ’’عوفر‘‘ جیل سے 60 بچوں جن کی عمریں 16 سے 18 سال کے درمیان ہیں۔ انہیں عوفر جیل سے ایک دوسری جیل دامون میں منتقل کردیا۔ جیل میں منتقلی کےعمل کے ساتھ ساتھ صیہونی حکام کی طرف سے کم عمر اسیران کو کسی قسم کی طبی سہولت فراہم نہیں کی گئی اور انہیں وکیل کرنے کے حق سے بھی محروم رکھا گیا ہے۔

خیال رہےکہ اسرائیلی جیلوں میں قید 6500 فلسطینیوں میں 300 بچے ہیں۔ اس کے علاوہ سیکڑوں انتظامی قیدی اور ایک ہزار سے زائد بیماریوں میں مبتلا اسیران شامل ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close