مقبوضہ فلسطین

فلسطینی علاقوں پر اسرائیلی بمباری، فلسطینی استقامت کا نتیجہ ہے۔ حازم قاسم

شیعت نیوز : فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے مطابق غاصب صیہونی حکومت نے غرب اردن کے علاقوں کی مقبوضہ علاقوں میں شمولیت کے منصوبے کے خلاف فلسطینی استقامت کے سبب غزہ پر اپنے حملے تیز کر دیئے ہیں۔

فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے ترجمان حازم قاسم نے ہفتے کے روز غزہ پر غاصب صیہونی حکومت کی وحشیانہ جارحیت پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے صیہونی دشمنوں کے مقابلے میں فلسطینی استقامت و مزاحمت کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ غزہ پر جارح صیہونی فوج کے حملے سے فلسطینی عوام کے عزم و حوصلے کمزور نہیں ہوں گے۔

تحریک حماس کے ترجمان نے کہا کہ غزہ کو دوبارہ جارحیت و بربریت کا نشانہ بنانے کا مقصد غرب اردن اور بیت المقدس میں فلسطینیوں سے غاصب صیہونیوں کی دشمنی کو مزید بڑھانا ہے۔

یہ بھی پڑھیں : غزہ میں متعدد اہداف پر اسرائیلی جنگی طیاروں کے فضائی حملے

اس سے قبل فلسطین کی اسلامی مزاحمتی تحریک حماس کے القسام بریگیڈ کے ترجمان ابوعبیدہ نے بھی فلسطین کے بارے میں امریکی صدر ٹرمپ کے منصوبے کی جلد رونمائی سے متعلق امریکی حکام کے اعلان کے ساتھ ہی کہا ہے کہ فلسطین کے مزاحمتی گروہ غاصب صیہونی حکومت کو غرب اردن کے علاقوں کو ہڑپ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اور صیہونی حکومت کو پشیمان ہونے پر مجبور کر دیں گے۔

پریس ذرائع نے اعلان کیا ہے کہ غاصب صیہونی حکومت کے جنگی طیاروں نے غزہ کے مرکزی اور مشرقی علاقوں کو جارحیت کا نشانہ بنایا ہے۔

ذرائع کے مطابق اسرائیل کے جنگی طیاروں نے جمعے اور ہفتے کی درمیانی رات غزہ پٹی پر شدید بمباری کی ہے۔

غاصب صیہونی حکومت غزہ اور غرب اردن کے علاقوں کو جارحیت کا نشانہ بنا کر امریکی صدر ٹرمپ کی حمایت سے سینچری ڈیل منصوبے پر یکم جولائی سے عمل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ فلسطینی گروہوں نے بھی جوابی کارروائی کرتے ہوئے غزہ کی جانب سے صیہونی بستیوں پر راکٹ حملے کئے ہیں۔ فلسطین کی ’معاً‘ خبری ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق یہ راکٹ حملے غلاف کے علاقے پر کئے گئے۔

صیہونی ذرائع کا کہنا ہے کہ اس راکٹ حملے کے بعد صیہونی حکومت کے آئرن ڈوم سسٹم کو فعال کر دیا گیا۔ ابھی تک ممکنہ نقصان کے بارے میں کوئی رپورٹ موصول نہیں ہوئی ہے۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close