مقبوضہ فلسطین

فلسطینی راکٹ حملوں سے اسرائیلی فوج کو 20 ملین ڈالرز کا نقصان

شیعت نیوز: اسرائیل نے اعلان کیا ہے کہ ایک فلسطینی شہری کے مارے جانے کے جواب میں فلسطینیوں کی طرف سے اسرائیل پر راکٹ برسائے جانے سے اسرائیلی فوج کو 20 ملین ڈالرز کا نقصان پہنچا ہے۔

اسرائیلی ریڈیو پر اسرائیلی فوج کے اس بیان میں کہا گیا ہے کہ فلسطینیوں کی طرف سے برسائے جانے والے راکٹ صیہونی آبادیوں میں گر کر پھٹتے ہیں جبکہ اس کے علاوہ ان راکٹ کو روکنے کے لئے اسرائیلی سرحد پر نصب ’’آئرن ڈوم‘‘ امریکی پیٹریاٹ میزائل بھی فائر کرنا پڑتے ہیں جن کی قیمت فلسطینی راکٹ سے ہزار ہا گنا زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں : جہاد اسلامی فلسطین کی اسرائیلی حکومت کے خلاف جدوجہد جاری رکھنے پر تاکید

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ فلسطینی راکٹ سے صیہونی آبادیوں کو پہنچنے والے نقصان سے بڑھ کر ان راکٹ کو روکنے کے لئے اسرائیلی فوج کی طرف سے فائر کئے جانے والے پیٹریاٹ میزائلوں سے ہی اسرائیلی فوج کو 20 ملین ڈالرز کا نقصان پہنچ چکا ہے۔

دوسری طرف فلسطینی مزاحمتی تحریک جہاد اسلامی کے ایک کارکن محمد الناعم کو سرحد کے قریب اسرائیل کی طرف سے توپخانے کا نشانہ بنانے اور پھر انہیں زخمی حالت میں بلڈوزر کے ذریعے شہید کرنے اور انکی لاش کی بے حرمتی پر فلسطینی مزاحمتی تحریکوں کی طرف سے اسرائیل پر دسیوں راکٹ برسائے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : فلسطینی مزاحمت کاروں کے صیہونی بستیوں پر جوابی راکٹ حملے

واضح رہے کہ اسرائیل اور فلسطین کی سرحد کے قریب چند فلسطینی جوان احتجاج کر رہے تھے کہ دوسری طرف سے اسرائیلی ٹینکوں اور فوجیوں نے انہیں اپنی فائرنگ کا نشانہ بنایا جس سے متعدد فلسطینی نوجوان زخمی ہو گئے جبکہ اسرائیلی فوجیوں نے بلڈوزر کے ذریعے زخمی محمد الناعم کو اس وقت کچل کر شہید کر دیا جب ان کے دوست انہیں بچانے کی بھرپور کوشش کر رہے تھے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close