مقبوضہ فلسطین

فلسطینی تنظیموں کی جانب سے سعودی عرب میں قید فلسطینیوں کی رہائی کی مساعی کا خیر مقدم

شیعت نیوز: اسلامی تحریک مزاحمت (حماس) کے بعد عوامی محاذ برائے آزادی فلسطین اور اسلامی جہاد نے بھی یمن میں انصار اللہ کی طرف سے سعودی عرب کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل کی کوششوں میں الریاض میں قید فلسطینیوں کی رہائی کو شامل کرنے کا خیر مقدم کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق اسلامی جہاد اور عوامی محاذ کی طرف سے جاری کردہ بیانات میں کہا گیا ہے کہ یمن میں انصار اللہ کی جانب سے سعودی عرب کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے کی ڈیل میں فلسطینی قیدیوں کی رہائی کو شامل کرنا قابل تحسین اقدام ہے۔

یہ بھی پڑھیں : جیو نیوز کی ایران اور رہبر انقلاب کے خلاف ہرزہ سرائی، ایرانی سفارتخانے کا سخت درعمل

خیال رہے کہا انصار اللہ کے سربراہ عبدالملک الحوثی نے سعودی عرب کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے میں سعودی عرب کی جیلوں میں قید فلسطینیوں کو شامل کرنے کا اعلان کیا ہے۔

قبل ازیں حماس کا کہنا ہے کہ انصار اللہ کی طرف سے سعودی عرب کے ساتھ قیدیوں کے تبادلے میں فلسطینی قیدیوں کو شامل کرنا بھائی چارے کی عمدہ مثال ہے۔

حماس نے بھی سعودی عرب سے ایک بار پھر مطالبہ کیا ہے کہ وہ حراست میں لیے گئے تمام فلسطینیوں کو فوری طور پر رہا کرے۔

یہ بھی پڑھیں : فلسطینی قیدیوں کی رہائی کے مقابلے میں سعودی پائلٹوں کو رہاکرنے پر تیار ہیں۔ تحریک انصار اللہ

حماس نے سعودی عرب سے کہا ہے کہ وہ حراست میں لیے گئے جماعت کے سینیر رہنما محمد الخضری اور ان کے بیٹے ہانی الخضری کو رہا کرے۔

حال ہی میں حماس کے سیاسی شعبےکے سربراہ اسماعیل ھنیہ نے بھی سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے حراست میں لیے گئے تمام قیدیوں کو فوری طور رہا کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

سعودی عرب نے گذشتہ برس ایک سو سے زائد فلسطینیوں کو کریک ڈاؤن میں حراست میں لے رکھا ہے۔

حال ہی میں سعودی عرب کی ایک فوجی عدالت میں ان فلسطینیوں پر اسرائیل کے خلاف مزاحمت کے لیے فنڈز جمع کرنے کے الزامات میں ظالمانہ ٹرائل شروع کیا گیا۔

ٹیگز

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close