اہم ترین خبریںپاکستان

یہ سر کٹ توسکتا ہے مگر جھک نہیں سکتا، عزادار حسین ؑمجلس سے دستبردارناہونے پر گرفتار

اے ایس آئی کی دھمکی کو جوتے کی نوک پر رکھتے ہوئے نڈر عزاداری حسین ؑ وجاہت علی میر نے کہاکہ ایسی ہزار گرفتاریاں مجھے قبول ہیں مگر عزادارئ سید الشہداء میں رکاوٹ تسلیم نہیں ۔

شیعیت نیوز: یہ سر کٹ توسکتا ہے مگر جھک نہیں سکتا،عزادارحسین ؑمجلس سے دستبردار ناہونے پر گرفتار، عمران خان کے نئے پاکستان کے تھانہ خان رازق پشاورکے اے ایس آئی جان عالم کی گرفتار عزادار وجاہت علی میر کو جیل منتقل کرنے کی دھمکی ، عزادار کی سرکٹادینے کوترجیح لیکن فرش عزا نا بچھانے سے انکار۔

تفصیلات کے مطابق پشاور کے علاقے تھانہ خان رزاق کی حدود میں اے ایس آئی جان عالم نے مقامی عزادار وجاہت علی میر کے گھر جاکر نواسہ رسول ؐ امام حسینؑ کی عزا کا فرش بچھانے پر گرفتاری کی دھمکی دی ۔ اے ایس آئی کی دھمکی کو جوتے کی نوک پر رکھتے ہوئے نڈر عزاداری حسین ؑ وجاہت علی میر نے کہاکہ ایسی ہزار گرفتاریاں مجھے قبول ہیں مگر عزادارئ سید الشہداء میں رکاوٹ تسلیم نہیں ۔

یہ بھی پڑھیں : کالعدم سپاہ صحابہ کے مولویوں کا وحشیانہ پن عروج پر، اوچشریف میں ایک اور طالب علم پر بہیمانہ تشدد

ذرائع کے مطابق اے ایس آئی جان عالم کو عزادار وجاہت میر کا یہ جرائت مندانہ انداز ناگوار گزرا تو اس نے اپنی نفری اور عہدے کی طاقت کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے وجاہت علی میر کو گرفتار کرکےبازار خداداد کے راستے تھانہ خان رازق شہید کابلی کی حوالات میں بند کر دیا۔

ذرائع نے بتایا کہ اے ایس آئی جان عالم نے عزادار وجاہت علی میر کو دھمکی دی ہے کہ اگر وہ عزاداری سے دستبردار ہوجائے تو اسے چھوڑدوں گا ورنہ جیل منتقل کروں گا۔ مگر وجاہت علی میر کے لبوں پر ایک ہی بات ہے کہ عزادارئ سید الشہداء کے لیے اپنا گھر بار سب لٹا سکتا ہوں، اپنا سر کٹا سکتا ہوں پر عزادارئ سید الشہداء سے انکار نہیں کرسکتا۔

یہ بھی پڑھیں : سابق وزیراعظم کو جواب دینا ہوگاکہ وہ کن ملک دشمنوں کی خوشنودی حاصل کررہے ہیں ،علامہ راجہ ناصرعباس

واضح رہے کہ پنجاب کے بعد اب خیبرپختونخوا میں بھی تحریک انصاف کی تبدیلی سرکار کے ناک کے نیچے شیعہ مکتب فکر کی بنیادی مذہبی آزادیوں پر شب خون مارا جارہا ہے ، عمران خان صاحب کی ریاست مدینہ میں ذکر نواسہ رسول ؐ پر پابندی ، گرفتاری اور دھمکیاں حکومت کی گڈ گورننس پر سوالیہ نشان ہے ،وفاقی وصوبائی حکومت واقعے کی فوری تحقیقات کرکے ذمہ دار پولیس افسر کے خلاف فوری کاروائی عمل میں لائے۔

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close