پاکستان

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ہنگامہ آرائی، بنیادی تربیت کا فقدان ہے، علامہ سید ساجد نقوی

احتجاج کے نام پر کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جاسکتی

شیعت نیوز : پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی لاہور میں ہونیوالی ہنگامہ آرائی اور مریضوں کو تکلیف پہنچائے جانے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے علامہ سید ساجد علی نقوی کا کہنا تھا کہ قرآن کی رو سے ریاست مدینہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ تربیتی نظام وضع کرے اور عوام کو اخلاق اور قانون کی پاسداری کی تربیت دے۔

اطلاعات کے مطابق شیعہ علماء کونسل پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی جیسے انتہائی حساس اسپتال میں ہزاروں کی تعداد میں حملہ آور کیسے گھس آئے؟ پاکستان جیسے اسلامی ملک میں صریحاً اور دن دیہاڑے نا صرف قانون کو روند ڈالا گیا بلکہ اسلامی تعلیمات اور معاشرتی روایات تک کا خیال نہ کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ جو اقدامات اس ہنگامہ آرائی کے بعد اٹھائے گئے وہ پہلے کیوں نہیں اٹھائے گئے۔ انھوں نے کہا کہ جب کچھ عرصہ سے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے دوگروپوں کے درمیان تلخ صورتحال درپیش تھی جس کا صوبائی انتظامیہ کو علم بھی تھا تو پھر اس معاملے کی سنگینی کا احساس کیوں نہیں کیا گیا ؟

یہ بھی پڑھیں :سربراہ ایم ڈبلیوایم علامہ راجہ ناصرعباس کی پی آئی سی لاہور پر حملے کی مذمت، قانونی کاروائی کامطالبہ

علامہ سید ساجد علی نقوی نے اس مشکل صورتحال میں متاثر ہونیوالے مریضوں اور ان کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی کا بھی اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس واقعہ کی جامع اور مثالی تحقیقات کرکے تمام پہلوؤں کا جائزہ لے کر اس میں ملوث افراد کیخلاف قانون کے تحت اقدامات کئے جائیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ کسی بھی مہذب جمہوری معاشرے میں احتجاج کے نام پر کسی کو بھی قانون کو ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close