ایران

پورے عالم اسلام میں اتحاد کی آواز گونج اُٹھی ہے۔ آیت اللہ اراکی

شیعت نیوز: عالمی مجلس تقریب مذاہب اسلامی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ محسن اراکی نے کہا ہے کہ اب پورے عالم اسلام میں تکفیر اور بغات کی لہر محدود ہوچکی ہے اور اس میں اتحاد کی آواز گونج اُٹھی ہے۔

ان خیالات کا اظہار آیت اللہ محسن اراکی نے بدھ کے روز دارالحکومت تہران میں منعقدہ 33 ویں عالمی اتحاد امت کانفرنس کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

یہ بھی پڑھیں : ایران کے خلاف امریکی صدر ٹرمپ کی حکمت عملی ناکام ہوگئی ہے۔ حسن نصرالله

انہوں نے بانی اسلامی انقلاب حضرت امام خمینی ؒ کے ساتھ خراج عقدیت پیش کرتے ہوئے کہا کہ پرانے زملنے میں تکفیریوں کی آواز پوری اسلامی دنیا میں پھیل چکی تھی لیکن امت مسلمہ نے گزشتہ سالوں کے دوران تکفیر اور بغاوت کے نتیجے کو دیکھ لیا اور اب تکفیر اور بغاوت کی کوئی آواز سنائی نہیں دیتی ہے۔

انہوں نےخطاب کرتے ہوئے کہا کہ اتحاد و وحدت کی سوچ اور فکر نے تکفیری اور تفرقہ ڈالنے والی سوچ اور فکر پر غلبہ حاصل کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں مسجدالاقصی اور فلسطین کا دفاع ماضی کی نسبت مسلمانوں اور دنیا والوں کیلئے ضروری ہو گیا ہے۔

آیت اللہ محسن اراکی نے فلسطین اور علاقے کے دیگر ممالک میں مزاحمتی محاذ کے دفاع کی ضرورت پر تاکید کرتے ہوئے کہا کہ مزاحمتی محاذ کی کامیابیوں نے اس محاذ کو مضبوط بنا دیا ہے۔

آیت اللہ اراکی نے مزید کہا کہ مسلمانوں کے درمیان یکجہتی اور اتحاد میں اضافہ ہوتا جار رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے اتحاد کی آواز جنوب مشرقی ایشیائی ممالک جیسے ملائیشیا، انڈونیشیا اور بھارت سے لے کر افریقی ممالک جیسے مراکش اور موریطانیہ سے سنائی جاتی ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران میں رسول اکرم ؐ کی یوم ولادت اور ہفتہ وحدت کے موقع پر 33 عالمی اتحاد امت کانفرنس ’’القدس الشریف، اتحاد امت کا محور‘‘ کے عنوان کے تحت 14 سے 16 نومبر تک دارالحکوکت تہران میں انعقاد کیا جاتا ہے جس میں 90 ممالک سے آئے 350 نامور افراد شریک ہیں۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close