اہم ترین خبریںایران

سپاہ قدس کے کمانڈر حاج قاسم سلیمانی کے اہل خانہ کا یوم القدس کے موقع پر عالم اسلام کیلئےاہم پیغام

ہم سردار شہید سپاہ قدس کے اہلخانہ روز قدس کے موقع پر شہید کے خون کے رآستے پر اپنے شہید والد کے خون کے ساتھ یہ اعلان کرتے ہیں کہ اپنے آخری قطرے خون تک آخری سانسوں اور توانائیوں تک فلسطین کی آزادی کے لئے میدان میں کھڑے ہوئے ہیں

شیعت نیوز: سپاہ قدس کے کمانڈر شہید حاج قاسم سلیمانی کے اہل خانہ نے عالمی یوم القدس کے موقع پر دنیا بھر کے حریت پسندوں کے نام ایک پیغام میں کہا ہے کہ!

🔹سردار قاسم سلیمانی، جغرافیائی سرحد اور قید سے آزاد لشکر کے کمانڈر تھے اور ہیں. دنیا کی کسی بھی گوشے میں اگر کوئی مستکبر کسی مظلوم اور مستضعف کو پامال کرنے کا ارادہ کرے، تو یہ سپاہ قدس تھی اور ہے کہ جو ہمیشہ اس مستکبر کے سامنے ڈٹی رہی اور عالمی مقاومت کے سپاہیوں کی حمایت کرتی رہی

.🔹جغرافیائی سرحد سے آزاد سپاہ قدس کا نام، مسجد اقصی کی رہائی کی پہچان ہے اور امام خمینی کے نعروں میں سے ایک بلند نعرہ ہے. انقلاب اسلامی نے اپنے ابتدائی دنوں میں ہی اسرائیلی غاصبوں کو ایران سے باہر نکالا اور اس کے سفارتخانے کی عمارت کو اس کے حقیقی مالکوں یعنی فلسطینیوں کے حوالے کردیا. جمہوری اسلامی ایران پر صدام کی جانب سے مسلط کردہ آٹھ سالہ جنگ میں بھی "قدس کی آزادی تک جنگ”جیسا نعرہ لگتا رہا اور اس راستے میں ہم نے بیش بہا خون کا نزرانہ پیش کیا

.🔹سالار لشکر سردار قاسم سلیمانی اسی ھدف کے تعقب میں تھے. ایران ہی صیہونی دشمن کی کرانہ باختری، غزہ اور پورے فلسطین پر ان کے قبضہ کی راہ میں مقاومتی تحریکوں کا محور رہا ہے. جمہوری اسلامی ایران نے فلسطین کی غیور مجاہد قوم کی ہر جہت سے مدد کی ہے اور یہ امام خمینی اور ان کے صالح جانشین آیت اللہ امام خامنہ ای کے احکامات کی روشنی میں ہی ممکن ہے. یہ وہ مہم ہے جو کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہے ایران مذہبی سرحدوں کی پرواہ کئے بغیر قدس کی آزادی کے خواب کو حقیقت کا روپ دینے تک سپاہ قدس کی نگرانی میں اس مہم کو جاری رکھے گا۔

یہ بھی پڑھیں: بول ٹی وی پر فرقہ واریت کی ترویج میں مصروف اینکر کرن نازتکفیری مدرسے کی حافظہ ہیں،سپاہ صحابہ کا انکشاف

.🔹جنوری 2020کے ایک سیاہ جمعے کی صبح دنیا کے بدترین دہشتگرد نے سپاہ قدس کے سردار اور کمانڈر(حاج قاسم سلیمانی) کو عراق میں شہید کردیا. ان کی شہادت سے دشمن کے خلاف جھاد کے علاقے میں اور وسعت آگئی. یہ سردار تہران یا ایران کے کسی شہر میں شہید نہیں ہوئے تھے بلکہ وہ عالمی استکبار کے خلاف ایک مہم کے دوران ایک مقاومتی بلاک میں اپنے فرائض کی ادائیگی کے لئے وہاں پر تھے اور یہ اسی بات کی گواہی ہے کہ قدس کی آزادی کسی سرحد کا مسئلہ نہیں ہے اور اب یہ بات ایک ناقابل انکار زمینی حقیقت میں تبدیل ہوچکی ہے. اور یہ وہی اہم اتفاق ہے کہ امریکا اس بات کو اچھی طرح جان چکا ہے اسی لئے اس کو روکنے کے لئے بھاری سے بھاری قیمت دینے پر تیار ہے

.🔹آنے والا جمعہ روز قدس ہے کہ جو ماہ رمضان کا آخری جمعہ ہے. عالمی منحوس وباکرونا کے سبب اس سال فلسطین کی آزادی کے خواہشمند کڑوڑوں انسان اس سال میدان میں آکر اجتماعی ریلی نہیں نکال سکتے لیکن یہ فقط قصہ کی ظاہری شکل ہے. قدس کی یاد اور اس کا تذکرہ تو ہماری جانوں اور زبانوں پر جاری رہتا ہےجس طرح حاج قاسم نے فلسطینیوں کے ہاتھوں کو اسرائیلی صہیونی فوج کے خلاف پر کیا اور شہید حاج قاسم نے اپنے میدان میں حضور کے ذریعے غزہ اور دوسرے فلسطینی علاقوں میں اسرائیل کی نامشروع حکومت کے خلاف لوگوں کو مدد فراہم کی اور انہیں مقاومت کرنا سیکھایا اسی طرح شہید کا خون آخری کامیابی تک امریکا اور قدس پر غاصب حکمرانوں کا گریبان ہرگز نہیں چھوڑے گا اور کفر کے سرکردہ حکمرانوں کو چین کی نیند نہیں سونے دے گا۔

یہ بھی پڑھیں: فلسطین سمیت تمام مسائل کاحل عالم اسلام کے اتحا د میں ہے، تحریک آزادی القدس پاکستان

ہمیں کہا گیا ہے کہ “ الیس الصبح بقریب “ اس کی ہمیں بشارت دی گئی ہے اور سپاہ قدس دشمن کی آنکھوں کا کانٹا اور ان کی راہ کی سب سے بڑی رکاوٹ ہے وہ اپنی جگہ پر قائم ہے فلسطینی مجاہدوں اور دشمن کی شناخت رکھنے والے مسلمانوں کے شانہ نشانہ استکبار کے خلاف سینہ سپر ہے

ہم سردار شہید سپاہ قدس کے اہلخانہ روز قدس کے موقع پر شہید کے خون کے رآستے پر اپنے شہید والد کے خون کے ساتھ یہ اعلان کرتے ہیں کہ اپنے آخری قطرے خون تک آخری سانسوں اور توانائیوں تک فلسطین کی آزادی کے لئے میدان میں کھڑے ہوئے ہیں اور جب تک اسرائیل جو معصوم بچوں کو مارنے والا صہیونی ملک ہے اسرائیل کے قبضے سے فلسطین آزاد نہیں ہوجاتا ہم مظلوموں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں ۔

“وما النصر الا من عنداللہ ان اللہ عزیز حکیم”

والسلام وعلیکم ورحمت اللہ وبرکاتہ

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close