اہم ترین خبریںایرانشیعت نیوز اسپیشلمقالہ جات

(حاج قاسم سلیمانی کی زندگی پر ایک مختصر نظر (حصہ سوم

حاج قاسم سلیمانی کی زندگی پر ایک مختصر نظر

حصہ سوم

 

حاج قاسم سلیمانی کی زندگی

جنرل سلیمانی کے والد کا بیان

جنرل قاسم سلیمانی کے بارے میں دنیا کی رائے تو انکی شہادت کے بعد سامنے آئی۔ حاج قاسم کے والد حسن سلیمانی اپنے بیٹے کے اس رتبے کو پہلے سے جانتے تھے۔ انکا کہناتھا کہ حاج قاسم محض ایک خاندان سے تعلق نہیں رکھتے بلکہ وہ پورے ایران، اسلامی دنیا اور خاص طور پر شیعہ مسلمانوں سے تعلق رکھتے ہیں۔

غیرشیعہ انسانوں کا بھی شیعہ ہیرو

ممکن ہے کہ بعض لوگوں کو یہ آخری تعلق اچھا نہ لگے، مگر ایسے افراد کو اپنی غلط سوچ کو بدلنا چاہیے۔ کیونکہ یہ فخر کی بات ہے کہ حاج قاسم سلیمانی شیعہ مسلمان تھے۔ ایسے عظیم شیعہ مسلمان کہ جنہیں غیر شیعہ احترام کی نظر

سے دیکھتے ہیں۔اور اسکی وجہ یہ ہے کہ انہوں نے بلاتفریق رنگ و نسل ومذہب و مسلک، مظلوم انسانوں کی مدد کی۔

 

زایونسٹ کروسیڈرز سے جنگ

جنرل قاسم سلیمانی نے اپنے سنی بھائیوں کو زایونسٹ، کروسیڈرز اور انکے سہولت کار تکفیریوں کے شر سے بچایا۔ ورنہ تکفیری بھی ہم مسلک تو آل سعود کے ہی ہیں۔ انہوں نے غیر مسلموں کو بھی دہشت گردی سے نجات دلائی۔

حاج قاسم سلیمانی کی زندگی

بات کہیں اور نہ نکل جائے، پلٹتے ہیں حسن سلیمانی کے موقف کی جانب۔ ایک مرتبہ صوبائی گورنر نے حاج قاسم کے والد سے کہا تھا کہ آپکے بیٹے سے تو استکبار بھی ڈرتا ہے۔

تو انکے والد نے پلٹ کر جواب دیا تھا کہ مجھے آپ پر تعجب ہے کہ ایسا کہہ رہے ہیں۔ سابق گورنر کرمان نے حیران ہوکر سوال کیا کہ کیوں؟

سرباز ولایت حاج قاسم

حسن سلیمانی نے کہا کہ میرا بیٹا سرباز ولایت ہے، استکبار میرے بیٹے سے نہیں اسلام (کی طاقت) سے ڈرتا ہے جبکہ میرا بیٹا تو محض ایک علامت ہے اسلامی مملکت کی۔

خالص و مخلص انقلابی

حاج قاسم ذاتی و معاشرتی لحاظ سے بھی ملنسار اور بے لوث تھے۔ خالص و مخلص انقلابی تھے۔ مختلف رجحانات کے حامل ایرانی سیاسی رہنماؤں اور کارکنوں میں سے کسی ایک طرف جھکاؤ نہیں رکھتے تھے۔

انقلابی اقدار پر سمجھوتہ نہیں کرتے تھے۔

ریشم کی طرح نرم فولاد مانند سخت

مگر عام ایرانیوں پر اس حوالے سے سختی کے قائل بھی نہیں تھے۔ حتیٰ کہ بد حجاب لڑکیوں کے لئے بھی حسن ظن کے قائل تھے۔ کہا کرتے تھے کہ یہ بھی میری بیٹیاں ہیں۔

وہ ہر قسم کی بدعنوانی کے خلاف تھے۔۔ خاص طور پر احتسابی نظر رکھا کرتے تھے۔ اور اس ضمن میں اپنے پورے خاندان سے متعلق فکرمند رہا کرتے تھے۔ کڑی نظر رکھا کرتے تھے تاکہ انکے اپنے رشتے داراور قریبی افراد کسی قسم کی بدعنوانی میں ملوث نہ ہونے پائیں۔

قاسم سلیمانی و ابو مھدی مھندس کا رتبہ

حاج قاسم سلیمانی ہوں یا حاج ابو مھدی مھندس، یہ واقعاً فخر ولایت ہیں، کہنے کو یہ سرباز ولایت تھے، مگر یہ حضرت ولی عصر عج ہی جانتے ہیں کہ ان سربازان کا مقام و مرتبہ کیا ہے۔ یہ اپنی روحانی ماں جناب سیدہ فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا کے قابل فخر بیٹے ہیں۔

چشم تخیل سے دیکھیں کہ جنت الفردوس مقام اعلیٰ علیین میں خاتون جنت نے اپنے روحانی بیٹوں کا تعارف بڑے فخر سے کرایا ہوگا۔

واقعی ان امام زادگان عشق کے سالاروں کا یہی مقام و مرتبہ ہے کہ جنہوں نے کلنا عباسک کا نعرہ اباالفضل بلند کرکے داعی اجل کو لبیک کہا۔ سلام بر شہدائے ولایت مہدوی۔

 

عمار حیدری برائے شیعت نیوز اسپیشل

حاج قاسم سلیمانی کی زندگی پر ایک مختصر نظر(حصہ اول

حاج قاسم سلیمانی کی زندگی پر ایک مختصر نظر (حصہ دوم

Qassem Soleimani an icon of resistance in Islamic and Arab world

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close