یمن

رمضان میں بھی یمن کے نہتے عربوں پر سعودی اتحاد کی جارحیت جاری

شیعت نیوز: یمن کے نہتے عربوں کے خلاف سعودی عرب کی وحشیانہ بمباری کا سلسلہ رمضان المبارک میں بھی جاری ہے۔

المسیرہ کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے جنگی طیاروں نےتازہ ترین حملوں ميں یمن کے تین صوبوں مآرب، صعدہ اور حجہ کو نشانہ بناتے ہوئے شدید بمباری کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق امریکہ اور اسرائیل کے حمایت یافتہ سعودی اتحادی افواج کے لڑاکا طیاروں نے الحدیدہ پر درجنوں فضائی حملے کئے۔

یہ بھی پڑھیں : جارح سعودی فوجی اتحاد کی 68 بارجنگ بندی کی خلاف ورزی، 3 یمنی بچے شہید و زخمی

یمن کے خلاف جنگ اور جارحیت کا سلسلہ ایسے وقت میں جاری ہے جب سوئیڈن میں صنعاء اور ریاض کے وفد کے مابین 18 دسمبر 2018 کو الحدیدہ میں جنگ بندی پر اتفاق کیا گیا تھا تاہم سعودی جنگی اتحاد نے اپنی ہی اعلان کردہ جنگ بندی کی ایک دن بھی پابندی نہیں کی اور اس اعلان کے محض چند گھنٹے بعد ہی یمن کے رہائشی علاقوں اور شہری اہداف کو زمینی اور فضائی حملوں کا نشانہ بنانا شروع کر دیا۔

واضح رہے کہ سعودی اتحادی نے کورونا کی وجہ سے یمن میں جنگ بندی کا اعلان کیا تھا۔ لیکن سعودی اتحاد نے اپنی ہی اعلان کردہ جنگ بندی کی ایک دن بھی پابندی نہیں کی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب اور اس کے بعض اتحادی ممالک، امریکہ اور دیگر ملکوں کی حمایت کے زیر سایہ مارچ دو ہزار پندرہ سےیمن کے نہتے عربوں پر وحشیانہ حملے کر رہے ہیں۔ اس عرصے میں دسیوں ہزار یمنی شہری شہید و زخمی جبکہ دسیوں لاکھ یمنی بے سر و سامانی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہو گئے ہیں اور عالمی برادری خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔

سعودی عرب اپنے تمام تر وحشیانہ حملوں کے باوجود اپنا ایک بھی مقصد اب تک حاصل نہیں کر سکا ہے۔

پچھلے چند برسوں کے دوران مکمل زمینی، سمندری اور فضائی محاصرے کے باوجود یمنی فورسز کی دفاعی طاقت میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے۔

ٹیگز
Show More

متعلقہ مضامین

Back to top button
Close